Friday, December 30, 2011

Worse Condition of flood victims in Sindh.

اسلام و علیکم
الله پاک ہم سب پر اپنی رحمتیں، برکتیں نازل فرماے، امین
محترم، الله پاک نے ہم کو اپنے بندوں کی خدمت کرنے کا جو موقع ہم کو عطا فرمایا ہے ہم اس پر اپنے رب کے بہت شکر گزر ہیں اور رہیں گے. اور الله پاک کے حضور دعا کرتے ہیں کہ وہ ہم کو ہمارے مقصد اور مشن میں کامیابی کی توفیق عطا فرماے اور غیب سے ہماری مدد فرماے. امین. محترم وزیرستان میں ایک لمبا عرصہ گزرنے کے بعد سندھ کے سیلاب زدگان کے ساتھ مل بیٹھنے کہ اور کام کرنے کہ موقع ملا دل کو بہت سکون ملتا ہے جب خود کو اسے پریشن حال لوگوں کے ساتھ پاتا ہوں اور جو بھی بن پڑتا ہے ان لوگوں کے لئے کرتا ہوں. اپنے ہم وطنوں کی خدمت کرتے کرتے پاتا نہیں کیسے یہ پانچ - چھ برس بیت گے کچھ پاتا ہی نا چلا اور وقت گزرتا گیا. ان سب کے درمیان بہت مشکلات کہ سامنا کرنا پر. کبھی لوگوں کے الزامات، کبھی امن و امن کہ مسلہ کبھی ڈرون کا خوف کبھی امداد نا ہونے کا غم. مگر الله پاک نے ہمت، صبرحوصلہ عطا فرمایا اور آج یہاں تک پہنچا. میں الله پاک کا شکر گزر ہوں کے اس نے میری ہمت کو کبھی کمزور نا ہونے دیا. نہ ہی اس دنیا کا کوئی خوف آنے دیا نہ ہی موت کا ڈر. کبھی کبھی ایسا بھی ہوا کے ہاتھ میں کچھ نہیں ہوتا تھا اور اکیلا تنہا بیٹھ کر اپنے انسان ہونے پر افسوس ہوتا تھا اور کبھی ایسا بھی ہوا کہ اتنی امداد ملی کہ سنبھالے نہ جاتی تھی. اسے میں میڈیا کے دوستوں نے بھی کوئی کسر نہ اٹھا رکھی. مگر میرے اس کام کا مقصد کسی بھی ترہان سے خود کی نمائش نہ تھی اور نہ ہی ہے. کیوں کے اگر ایسا کرنا ہوتا تو آج تک بہت موقع ملا جس کے سے شہرت بھی ملتی اور دولت بھی. مگر الله پاک کے فضل و کرم سے ان سب سے محفوظ رہا کیوں کہ ابھ میں جن گیا ہوں کہ زندگی کا مقصد کیا ہے. جتنا بھی کماؤں گا آخرت کے لئے کماؤں گا کیوں ک قبر میں اپنے ساتھ اپنے عمل کو لے کے جانا ہے اس دنیا کی دولت اور پس تو یہیں رہ جانا ہے
  محترم، میں یہاں کے حالات دیکھ کر صرف پریشان ہی نہیں فکر مند بھی ہوں. کیوں کہ یہاں (سندھ) میں لوگ انسانوں کی ترہان نہیں جانوروں سے بھی بری حالت میں اپنی زندگی گزر رہے ہیں. سیلاب زدگان کی حالت تو جانوروں سے بھی بری ہے. فلاحی کام تو ایک طرف کوئی اپنی ذمداری تک پوری نہیں کر رہا اور نہ ہی کرنے کو تیار ہے. افسوس تو اس بات کا ہے ک وزیرستان میں جو کچھ دیکھا تھا اس سے بھی بد تر حالت یہاں کے لوگوں کی ہے. اسے میں صرف دعا ہی کر سکتا ہوں. اور اپنی چھوٹی سی کوشش کہ الله پاک مجھ کو اتنی توفیق اور ہمت دی کے میں ان لوگوں کہ لئے کچھ کر سکوں
محترم، میں ایک دفع پھر آپ سے اپیل کرتا ہوں کہ یہاں پر گرم کپڑوں کی بہت کمی ہے. ادویات نہ ہونے کہ برابر ہیں. آپ سب انسانیت کہ نام پر یہاں کے لوگوں می مدد کریں. کیوں کہ الله پاک آپ کو آپ کے ہر ہر نیک عمل کا بدلہ آپ کو عطا فرماے گا
ہم اس وقت بدین (سندھ) کے علاقے چاچڑ میں موجود ہیں جہاں تقریباً ٥٠٠ (پانچ سو) سے زیادہ بچوں کہ پاس گرم کپڑے نہیں ہیں بہت زیادہ خواتین ہیں جن کہ پاسس گرم کپڑے نہیں ہیں، یہ لوگ سرد موسم کا شکار ہیں، فلو، نزلہ، زکام، اور پیٹ کا امراض بہت زیادہ ہیں. اس پورے علاقے میں ایک بھی ڈاکٹر نہیں ہے ہم اپنے ساتھ جو بھی لاۓ ہیں وہ یہاں دے چکے ہیں. مگر یہ سب بہت کم ہے. ہم نئی حکومتی اداروں سے بھی رابطہ کیا کچھ دوستوں سے بھی رابطہ کیا مگر ابھی تک کوئی اچھی بات نہیں دیکھی نہ ہی سنی. ہم آپ سے اپیل کرتے ہیں کہ انسانیت کہ نام پر ان بے سہارا لوگوں کی مدد کریں. کیا پاتا ہمارا کون سا عمل الله پاک کو پسند آجاۓ اور ہم الله کہ کامیاب بندوں میں شمار کے جائیں. مجھ کو اللہ پاک کی ذات سے پوری امید ہے کہ ہم صبح مل کر ان پریشانیوں اور مشکلات پر بہت آسانی سے قابو پا سکتے ہیں.
آپ اگر ہم سے کوئی رابطہ کرنا چاہتے ہیں تو ہم سے رابطہ کریں

جزاک الله
سید عدنان علی نقوی
ٹیم آشیانہ
 

S. Adnan Ali Naqvi: s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
Syeda Faryal Zehra: faryal.zehra@gmail.com
Mohammad Nadeem: nadem.mohd@hotmail.com
or hit us with a message on given below:
+92 345 297 1618
+92 313 279 8085
+92 333 342 6031
+92 324 265 2046
Click Here to Know About Syed Adnan Ali Naqvi

Tuesday, December 27, 2011

Volunteer required (Urgently)

"بسم الله الرحمن الرحيم"


اسلام و علیکم

Assalam O Alikum,

With the name of ALLAH Almighty, who is most beneficial and merciful on us.

Team Ashiyana is volunteer working for the flood victims of Sindh. (Pakistan). The team is working under the supervision of Syed Adnan Ali Naqvi ( a social worker, working for the victims of earthquake, war on terror & flood since October 2005).

He has lost his sister and nephew in October Disaster at Islamabad. The working area is to supply medicines, clothes and food stuff to the victims.

Team Ashiyana is urgently looking for the volunteers for its Badin camp (Sindh).
The students who are enjoying there winter vacation, Teachers are on holidays. Doctors, Nurses, & Peramedic staff are highly appriciated to join us.

In Badin (Sindh - Pakistan) a lot of the children's and women are facing terrible issues after flood and with this clod weather. 

Person's who are wilingly to join our camp for the short term or long term duration please contact us on the given below:

S. Adnan Ali Naqvi: s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
Syeda Faryal Zehra: faryal.zehra@gmail.com
Mohammad Nadeem: nadem.mohd@hotmail.com
or hit us with a message on given below:
+92 345 297 1618
+92 313 279 8085
+92 333 342 6031
+92 324 265 2046
May be anyone of our number will not accessible due to bad signal or electricity failure in this area. So, please leave your message we will contact you as soon as possible.
For visit our Relief camp please come at:
Ashiyana Camp - Badin Dadu Road. Indus Highway. Sindh.

Team Ashiyana is waiting for your earlier and permissive response.
Long Live Pakistan - Ameen!
جزاک الله
Syed Adnan Ali Naqvi (Team Ashiyana Badin - Sindh)

To know Syed Adnan Ali Naqvi click here:

Team Ashiyana: Appeal for the flood Victims of Sindh - Pakistan

اسلام و علیکم
الله پاک کی ذات جو بڑی بے نیاز اور نہایت رحم کرنے والی ہے. محترم، ہم آپ کی خدمات میں اپنے کام کی تفصیلات اور سندھ کی سیلاب زدگان کو پیش آنے والی مشکلات کی بڑے میں آگاہی دینے کی پوری کوشش کرتے رہے ہیں اور کر رہے ہیں. محترم. ابھہ سے کچھ دن قبل بھی آپ کو بلاگ اور ایمیل کی ذریے آپ کو یہاں کی حالت کی بارے میں بتایا. جیسے جیسے سردی کہ موسم بڑھ رہا ہے ویسے ہی سندھ کی سیلاب زدگان کی پریشانیوں میں اضافہ بھی ہوتا جا رہا ہے. ٹیم آشیانہ میں شامل ہر ممبر اپنی پوری کوشش کر رہا ہے کی جس ترہان بھی ممکن ہو اپنے سیلاب زدگان بھائی بہنوں کی مدد کریں. محترم جیسا کے آپ صبح کہ علم میں ہے اور آپ صبح دیکھ بھی رہے ہونگے کہ یہاں پاکستان میں صرف ایک ہی کام بہت اچھی ترہان اور بلکل سہی رفتار سے ہو رہا ہے اور وہ کام ہے سیاست کہ. ہر طرف جلسوں اور جلوسوں کی بھر مار ہے. ہم سب دعا کرتے ہیں کے جس ترہان یہ جلسے کامیاب ہو رہے ہیں اور یں کو کامیاب کرنے کے لئے ہمارے سیاست دن اپنی جان مار رہے ہیں بلکل اسی طریقے سے ان سیاست دانوں کو ہم عوام کہ بھی کچھ خیال ہو. امین.
محترم، ہم اپنی بربادی یا کام اقلی کہ کیا رونا روے. حالت یہ ہے کہ عمران خان بھائی نئی اپنے کراچی کہ جلسے کے لئے قریباً ایک کروڑ خرچ کر ڈالے، آج صدر پاکستان محترمہ بینظیر کی برسی پر کروڑ روپے خرچ کر کے اس برسی میں اپنی سیاسی طاقت کہ مظاہرہ کرنے والے ہیں، میاں صاحب بھی لاکھوں روپے خرچ کر کے نگر نگر کہ دورہ کر رہے ہیں. اے کاش! کہ ہمارے حکمرانوں اور حکومت کے امیدواروں کو الله پاک یہ عقل بھی عطا کرے کے یہ لوگ جو پس اپنی طاقت دکھانے پر خرچ کر رہے ہیں یہی پس اگر ان مظلوم اور لاچار لوگوں پر خرچ کیا جاۓ تو ایک خاموش انقلاب آسکتا ہے. ہم لوگوں کو جلسوں اور جلوسوں کی نہیں اس ٹھنڈ سے بچنے کے لئے گرم کپڑوں کی ضرورت ہے، ہم کو اپنی عورتوں، بچوں اور بزرگوں کے لئے دواؤں کی ضرورت ہے، ہم کو سیلاب سے متاثرہ لوگوں کو ان کے گھروں میں بھیجنے کے لئے ایک بہت بری رقم کی ضرورت ہے کے جس سے یہ لوگ ایک دفع پھر سے اپنی زندگی شروع کر سکیں. لیکن ایسا معلوم پڑتا ہے کہ صبح کو اپنی اپنی پر ہے. ابھ تو دوست بھی ہمارے آواز لگانے پر پالت کر نہیں دیکھتے. ہم روز امید کرتے ہیں کہ شاید کوئی حکمران، کوئی غیر سیاسی بندہ. کوئی الله کہ بندہ سیلاب زدہ علاقوں مے اے گا اور ہماری مشکلات کو ختم کرنے میں ہماری مدد کرے گا.
محترم، ہم ان حالات میں بھیک نہیں مانگے تو اور کیا کریں. ٹیم آشیانہ کے والنٹیر کراچی اور حیدرآباد میں بھیک مشن سر انجام دے رہے ہیں. ہم کو کسی کہ پیسہ دولت نہیں چاہیے، ہم کو صرف گرم کپڑے چاہیے، خاص کر خواتین اور بچوں کے لئے، آپ میں سے کسی کو اندازہ نہیں ہے کہ سیلاب سے متاثرہ بدین، دادو اور دوسرے علاقوں میں سیلاب متاثرین کتنی بری حالات میں ہیں. مرد حضرت تو کسی نا کسی طریقے سے گزارا کر ہی رہے ہیں مگر خواتین اور بچوں کی حالات بہت خراب ہے. ہم خود ادھر ادھر سے کچرا اور لکڑیاں اکھٹا کر کے آشیانہ کمپ کہ بہار لگا کر خود کو سردی سے دور رکھنے کی ناکام کوشش کرتے ہیں. ان علاقوں میں فلو، نزلہ، زکام، بخار اور دوسری موسم کی بیماریاں بہت تیزی سے پھیل رہی ہیں. ادویات نا ہونے کے برابر ہیں. ڈاکٹر تو صرف نام ہی کے لئے یہاں اتے ہیں. ہم خود بہت دفع اپنے دوستوں سے اپیل کر چکے ہیں کہ یہاں کوئی ڈاکٹر بھیجو ہم کابھ تک بچوں کو اندازے سے دوائی دیتے رہے گئیں؟
محترم، ہم آپ سب سے اور جہاں جہاں ہمارا یہ پیغم پہنچ رہا ہے ان سب سے ہاتھہ جوڑ کر یہ اپیل کرتے ہیں. درخواست کرتے ہیں ہیں، بھیک مانگتے ہیں کہ آپ لوگ اپنے دوستوں اپنے ہم وطنوں کو یہ احساس دلائیں کے یہ سیلاب متاثرین بھی ہمارے ہیں. یہ ہمارے ہی بھائی بہیں ہیں. ہمارے ہی دوست ہیں. ہمارے ہی ملک کہ باشندے ہیں. ینن کو بھی ہماری ترہان جینے کہ حق حاصل ہے. آج یہ لوگ مجبور ہیں بے بس ہیں، بے سہارا ہیں، آج ان کو ہماری ضرورت ہے، ہماری مددد کی ضرورت ہے. یہ لوگ ہم سے ہماری دولت نہیں مانگ رہے. بس جینے کہ حق مانگ رہے ہیں. جو دینا ہم پر فرض بھی ہے اور ان کہ حق بھی ہے.
ہم ایک دفع پھر اپنے تمام دوستوں، پاکستانی بھائی بہنوں سے اپیل کرتے ہیں کے سندھ کے سیلاب متاثرین کے لئے گرم کپڑوں، ادویات اور کھانے پینے کی چیزوں کی اشد ضرورت ہے. آپ ایک قدم آگے بڑھائیں، الله پاک برکت ڈالنے والے اور اس کام کو آسان کرنے والے ہیں.انشا الله!
ٹیم آشیانہ کے بڑے میں معلومات حاصل کرنے کے لئے رابطہ کریں.
Syed Adnan Ali Naqvi
s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
Faryal Zehra
faryal.zehra@gmail.com
Mohammad Nadeem
nadem.mohd@hotmail.com
Mansoor Ahmad
mansoorahmed.aaj@gmail.com
 یا پھر ہم کو فون کریں.

1618297 345 0092
link
http://ashiyanacamp.blogspot.com
سندھ کے سیلاب متاثرین آپ کی دواؤں اور مدد کے منتظر ہیں.
جزاک الله
سید عدنان علی نقوی
ٹیم آشیانہ
بدین - دادو روڈ
بدین، کراچی.
          

Saturday, December 24, 2011

Urjently Required Volunteers (to work in Badin - Sindh) "For Flood Victims"

اسلام و علیکم
ٹیم آشیانہ کو سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں فلاحی کام میں مدد کرنے کے لئے والینٹرز کی اشد ضرورت ہے. جیسا کے کراچی اور دیگر شہروں میں سکول اور کالج کی موسم سرما کی تعطیلات ہیں. اکثر بچے سردیوں کے مزے لوٹنے کے لئے مری وغیرہ جاتے ہیں. ہم ان بچوں کو اور اساتذہ کو دعوت دیتے ہیں کے وہ ٹیم آشیانہ کو جوائن کریں اور سیلاب زدہ بھائی بہنوں اور بچو کے ساتھ کچھ وقت گزاریں. ہم آپ کو یقین دلاتے ہیں کے ہمارے ساتھ کام کر کے آپ کو بہت سکوں ملے گا اور بہت کچھ سیکھنے کو بھی ملے گا. اسے دوست جن میں ڈاکٹر، نرس شامل ہیں وہ بھی ہم کو جوائن کر سکتے ہیں- ٹیم آشیانہ کو آپ کے ساتھ کی ضرورت ہے، بدین اور دوسرے سیلاب زدہ علاقوں میں بہت بچے اور متاثرہ لوگ آپ کی مدد اور امداد کے منتظر ہیں

ٹیم آشیانہ فلحال بدین اور اس پاس کے علاقوں میں راشن، گرم کپڑے اور ادویات فراہم کر رہی ہے. ہم کو یقین ہے کے بہت سارے دوست اور ساتھ انسانیت کے اس مشن میں شریک ہو کر شکریہ کہ موقع دیں گے.
ٹیم آشیانہ کہ حصہ / ممبر بننے کے لئے ہم سے رابطہ کریں.
Ashiyana Camp, Dadu - Badin Road.
Team Ashiyana.
Syed Adnan Ali Naqvi
s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
Faryal Zehra
faryal.zehra@gmail.com
Mohammad Nadeem
nadem.mohd@hotmail.com
Mansoor Ahmed
mansoorahmed.aaj@gmail.com
یا ہماری ٢٤ گھنٹہ آن لینے نمبر: +92 345 297 1618 پر رابطہ کریں.

آپ کی مدد کے منتظر، ٹیم آشیاں.
جزاک الله
 

Team Ashiyana Up Date (Badin - Sindh) "Working for the flood victims".

اسلام و علیکم
محترم جناب، ہم اپنی پوری کوشش کرتے ہیں کہ آپ کو سیلاب کے متاثرہ علاقوں کے بارے مے جو بھی معلومات ہوں فراہم کر سکیں، مگر ہمارے پاس اتنے ریسورسس نہیں کے ہم جلدی جلدی اپ ڈیٹ کر سکیں. ہم آپ کو بتا چکے ہیں کے ہم سندھ میں سیلاب سے متاثرہ لوگوں کے لئے جو بھی بن پڑھ رہا ہے کر رہے ہیں. مگر کچھ وقت تھوڑا سکوں سے نہیں گزرتا تو ایک نئی مشکل آجاتی ہے. ہم کو پوری امید بلکے یقین تھا کہ حکومت اور دوسرے ادارے ان لوگوں کے لئے اپنی پوری قوت سے کام کریں گے اور کوئی کسر نہیں چھوڑی جاۓ گے کہ یہاں کے لوگ جلدی اپنے گھروں کو جا سکیں. مگر افسوس کام کرنا تو دور کی بات یہاں کے لوگوں کو پوچھا تک نہیں جارہا. اس بارے میں ہم جو کہیں کام ہے کیوں ک نقار خانے میں طوطی کی سنتا کون ہے؟ ہم کو افسوس اپنے پاکستانی بھائی بہنوں پر ہے جو ہر دفع پورا یقین دلاتے ہیں کہ آپ قدم بڑھائیں ہم آپ کے ساتھ ہیں مگر ہوتا الٹ ہے. تھوڑا وقت ساتھ دینے کے بعد ہمار بھائی اور دوست ہم کو اسے ہی بھول جاتے ہیں کہ جیسے ہم کو جانتے تک نہیں. ہم اپنے بھائی بہنوں کہ حق میں صرف دعا ہی کر سکتے ہیں، ہدایت دینے والی ذات الله پاک کی ہے
الله بھلا کرے میڈیا والوں کہ کہ جو ہمیشہ چڑھتے سورج کی پوجا کرتے ہیں، یہاں حل ایسا ہی ہے کہ جو دیکھتا ہے ووہے بکتا ہے. پچھلے ہفتے کراچی جانے کہ اتفاق ہوا. جس خبر پر نظر ڈالی تو سیلاب زدگان تو دور کی بات سندھ کہ نام تک نہیں سنا. صرف میمو یا زرداری صاحب یا حکومت یا آرمی، بس یہی خبری ہر طرف تھیں. کوئی ایک ایسا نہیں تھا جو ان سیلاب زدگان کی پریشانیوں اور ان کے مسائل پر خبر بنا رہا ہو یا کسی کو سیلاب زدہ علاقوں کی طرف سے کوئی اطلاع دے رہا ہو. ہم جیسے لوگ تو کچھ بھی نہیں. ہم نے میڈیا کے کچھ دوستوں سے رابطہ کرنے کی کوشش کاری. کے کوئی ہمارے ساتھ بدین اور دوسرے سیلاب زدہ علاقوں کہ دورہ کرے اور دیکھے کے یہاں کے حالت کیسے ہیں. کون ہے جو مدد کے لئے آج بھی آس لگاۓ بیٹھا ہے، کون ہے کے جس کے پاس آج بھی خانے کے لئے کچھ نہیں. کپڑے نہیں. دوائیں نہیں. مگر افسوس ہم کوئی بڑی خبر نہ دے سکے. ہاں ایک خبر ضرور ہے ک ٢٧ دسمبر ٢٠١١ کو صدر پاکستان لاڑکانہ میں ایک بارے جلسے عام سے خطب کرنے والے ہیں اور اپنی سیاسی قوت کہ بھر پور مظاہرہ کرنے والے ہیں. الله پاک ان کو کامیاب کرے - آمیں. کاش کے ایسا ہوتا ہے جتنا خرچہ اس جلسے کے لئے کیا جا رہا ہے وہ پیسا ان لوگوں کے فلاح بہبود کے لئے خرچ کیا جاتا.. مگر یہاں تو جو دکھتا ہے وہی بکتا ہے. ابھ تو ہم کو بھی اپنے دوستوں اور آپ کے سامنے ہاتھ پھیلاتے ہوۓ شرم اتی ہے کہ پچھلے ٥ برسوں سے میں یہی کام کر رہا ہوں کے جہاں کوئی آفت اتی ہے بگڑ سوچے سمجھے پہنچ جاتا ہوں، اپنی باتوں سے اور عمل سے اپنے دوستوں کو اپنے ساتھ ملتا ہوں اور اپنے پریشن حال بھائی بہنوں کے درد باٹنے لگ جاتا ہوں. مجھ کو میرے خاندان والے، دوست احباب پاگل، دیوانہ اور جانے کن کن ناموں سے پکارتے ہیں مگر کوئی نہیں جتنا کے اپنے پریشن حل بھائی بہنوں کے ساتھ بیٹھ کر ان کے دکھ درد باٹنے میں الله پاک نے جو سکوں دیا ہے وہ شہری زندگی میں کہاں، الله سے یہی دعا کرتا ہوں کے الله پاک مجھ کو صبر، ہمت اور حوصلہ عطا فرماے کہ میں مرتے دم تک اسے ہی کاموں مے مصروف رہوں.
وزیرستان میں ١٠٠ سے زیادہ یتیم اور پریشن حل بچوں کو چور کہ سندھ آیا کے یہ بھی میرا گھر ہے، میرے دوستوں نے اپنے مکمل مدد کہ یقین دلایا اور کسی حد تک ساتھ بھی دیا جس ک لئے میں، میری ٹیم اور سیلاب زدگان ان صبح کے احسن مند ہیں اور دعا کرتے ہیں کے الله پاک ان کو اور توفیق عطا فرماے - امین. مگر وہ تو صرف سٹارٹ تھا ابھی تو بہت کچھ ہونا باقی ہے. ابھی بھی بہت سارے علاقے اسے ہیں جہاں سے پانی نہیں اترا. ہزاروں لوگوں کے پاس کھانے پینے کے لئے سہی غذا نہیں. ادوویت کی قلت تو ہے ہی. ابھ اچانک سے بڑھنے والی سردی نہیں رہی سہی کسر پوری کر ڈالی ہے
ٹیم آشیانہ جو کبھی بنتی ہے پھر ٹوٹ جاتی ہے کیوں ک ہمارے دوستوں کو زیادہ سختیاں سہنے کی عادت ہی نہیں اور بہت جلد تھک جاتے ہیں. مگر پھر کچھ نے دوست شامل ہو جاتے ہیں یا دوست پلٹ کر آجاتے ہیں اور ٹیم آشیانہ ایک دفع پھر سے بن جاتی ہے. الله کہ شکر ہے کہ ایک دفع پھر سے ٹیم آشیانہ بنانے میں کامیاب ہو چکا ہوں اور ابھ ہم اپنے سیلاب زدگان بھائی بہنوں اور بچوں کے لئے راشن، ادویات، گرم کپڑوں کہ انتظام کر رہے ہیں. ہم یہ نہیں کہتے کے یہاں ہر کسی کو گرم کپڑوں کی ضرورت ہے مگر یہاں ہزروں لوگ ابھ بھی اسے ہیں کے جن کے پاس سردی سے بچاؤ کہ لئے کچھ انتظام نہیں. خاص کر خواتین اور بچے. ہمارے یہ بچے گرم کپڑوں کی تلاش میں ادھر ادھر بھاگتے پھرتے ہیں اور رات کو کہی سے کچھ لکڑیاں جمع کر کے، کچرا جمع کر کے آگ لگا لیتے ہیں اور سردی سے بچنے کو کوشش کرتے ہیں. کاش کے میمو کسی کاغذ پر لکھا ہوتا اور ووہی کاغذ جلا کر ہم بھی اس کی گرم سینخ لے سکے. مگر وہ تو شاید . . . خیر.
محترم، یہاں رہ کر اور یہاں کے حالت کو دیکھ کر ہی کوئی ہماری بے بسی اور کمزوری کو سمجھ سکتا ہے. ہم ایک دفع پھر آپ سے اپیل کرتے ہیں کے اپنے یں بھائی بہنوں کے درد اور تکلیف کو سمجھتے ہوۓ ٹیم آشیانہ کی مدد کریں ہم صبح کے لئے تو کچھ نہیں کر سکتے مگر کچھ کے لئے آگے بڑھ کے قدم اٹھا سکتے ہیں. شاید کے کوئی ہماری اس کوشش کو دیکھ کر خود آگے بڑھے اور ہم سبھ مل کر ایک اچھی صبح کہ آغاز کر سکیں.
الله پاک ہم صبح کو توفیق عطا فرماے کے ہم دکھی انسانیت کی خدمات میں کوئی کسر نہ چھوڑیں اور روز حشر الله پاک کے سامنے سرخرو ہو سکیں.
ٹیم آشیانہ کی مکمل معلومات انشا الله بہت جلد ہی آپ کو رواں کر دی جائیں گی.
جزاک الله
سید عدنان علی نقوی
خادم، ٹیم آشیانہ
بدین سندھ.
s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
faryal.zehra@gmail.com
nadem.mohd@hotmail.com
mansoorahmed.aaj@gmail.com
link: http://ashiyanacamp.blogspot.com
 

Monday, December 05, 2011

Volunteer Required for Team Ashiyana: Badin, Sindh.

Assalam O Alikum,
With all respect this is to inform you that Team Ashiyana is working for the flood victims in Badin Sindh. We are working in remote areas where nobody wanna go and sit with the victims.
We are in try to manage a proper food supply, with some of the basic medication, clothes supply and other stuff if available.
Currently, We need support from the others to work with us in these areas, So please hit back us if anyone wants to work with us as Volunteer for a week or for some days. Teachers, Doctors, Nurses And Studetns are most welcome.
Hope to hear from you soon.
Jazak ALLAH
Syed Adnan Ali Naqvi
Team Ashiyana: Badin, Sindh.
s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
faryal.zehra@gmail.com
sareturn@homail.com
+92 333 342 6031.
+92 345 297 1618.

Team Ashiyana: work details from Badin Sindh.

اسلام و علیکم
محترم، بہت دنوں ک بعد حاضر ہونے ک لئے معذرت چاہتے ہیں اور معافی کے طلبگار ہیں. مگر جیسا کے ہم سب یہ جانتے ہیں کے جیسے حالت میں ہم یہاں کام کر رہے ہیں ان حالت میں ہم کبھی مدد سے محروم ہوتے ہیں کبھی ہمارے ساتھ والنٹیر نہیں ہوتے اور کبھی ہم کو مخامی لوگوں کہ ساتھ حاصل نہیں ہوتا. ہم نہیں اپنی پوری  کوشش کری کے ہم سے جو بھی بن پڑتا ہے ہم اپنے سیلاب زدگان بھائی بہنوں ک لئے کریں، اور الله پاک کے فضل و کرم سے کر رہے ہیں. ہمارے کام میں کمی ضرور ہوتی ہے مگر آپ سب کی دعاؤں سے یہ کام رکتا نہیں بلکے چلتا جا رہا ہے. ہم کیا کرتے ہیں اور کہاں کرتے ہیں ان سب کی تفصیلات ہم چاہتے ہیں کی آپ سب کو آگاہ کریں مگر پچھلے دنوں ہمارے پاسس کوئی بھی عیسیٰ ذریع نہیں تھا جس کی ذریے ہم اپنے دوستوں سے رابطہ قائم رکھ سکتے.. مجبوراً  ہم نے اب ایک لپ ٹوپ حاصل کیا اور ابھ پوری کوشش یہی ہوگی کی روزانہ یا ہفتہ وار ہم اپنے کام سے آگاہ کرتے رہیں اور یہاں ک حالت کی بڑے میں بھی بتاتے رہیں ہم کو پورا یقین اور کامل ایمان ہے کی آپ سب کی دیں ہمارے ساتھ ساتھ ہیں، انشا الله. فلحال کچھ تصویر بھیج رہے ہیں جن سے آپ کو ہمارے کام کی نوعیت اور حالت کی بارے میں آگاہی ہو سکے گی
مزید تفصیلات بہت جلد اپداتے کر دی جائیں گی
آپ سب کی دعاؤں کی طلبگار
ٹیم آشیانہ
بدین سندھ.
جزاک الله

Sunday, October 02, 2011

’امداد میں تاخیر، بھوک سے اموات کا خدشہ‘


اسلام و علیکم
بین الاقوامی امدادی ادارے آکسفیم نے خبردار کیا ہے کہ بین الاقوامی برادری کی جانب سے پاکستان کے صوبہ سندھ میں سیلاب متاثرین کی امداد میں تاخیر برقرار رہی تو متاثرین کی بھوک سے اموات شروع ہو جائیں گی۔
آکسفیم کی ترجمان ڈاکٹر نورین خالد نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سندھ میں سیلاب متاثرین کی تعداد تازہ اعداد و شمار کے مطابق نواسی لاکھ ہو چکی ہے لیکن ابھی تک امداد کے وعدے پورے نہیں ہو سکے ہیں اور متاثرین کی امداد کے لیے وسائل دستیاب نہیں ہو سکے ہیں۔
انھوں نے کہا کہ متاثرین کی امداد کے حوالے سے بین الاقوامی برادری اور امداد دینے والے اداروں کو فوری طور پر متحرک کرنے کی ضرورت ہے کہ وہ اپنے وعدے پورے کریں۔
واضح رہے کہ جمعہ کو اقوام متحدہ کا کہنا تھا کہ سندھ میں بارشوں اور سیلاب کے متاثرین کی امداد کے سرکاری ذخائر دس اکتوبر کو ختم ہوجائیں گے جبکہ متاثرین کی مدد کے لیے اقوام متحدہ کی قریباً چھتیس کروڑ ڈالر کی درخواست کے جواب میں بھی صرف چھ فیصد حاصل ہو سکا ہے۔
جزاک الله
سید عدنان علی  نقوی اور دوست

ٹیم آشیانہ، بدین سندھ
http://www.bbc.co.uk/urdu/pakistan/2011/10/111002_oxfam_sind_flood_zz.shtml


Thursday, September 29, 2011

Team Ashiyana: Work Report from Badin, Sindh.

اسلام و علیکم
آج کچھ دن کے بعد حاضر ہونے کے لئے معذرت چاہتے ہیں. ہم لوگ اپنے کام مے کچھ اس قدر مگن اور اسے علاقوں مے چلے گے کے جہاں نا ہی پانی تھا اور نا ہی موبائل سگنلزتھے جس کی وجہ سے ہم کو کراچی مے موجود اپنے وولنٹیر سے بھی رابطہ کرنے مے بہت پریشانی کہ سامنا رہا
سید عدنان علی نقوی اور ہم صبح دوستوں نے مل کر اتنے دنوں مے کیا کام کیا اور کتنے فنڈز آے اوراستمال ہوۓ ان کہ خلاصہ درج کر رہے ہیں، انشا الله ابھ پوری کوشش ہوگی کے ہمارے دوست ہمارے کام سے ہر وقت آگاہ رہیں

Details of funds which received from: "September 27, till September 29, 2011."

Amount received from Bank, Western Union, Money Gram, Easy Pesa etc

From Abullah Bhai (Money gram): Rs. 34,500/= (Thirty four thousands & five hundred only)
From Qatar (in bank): Rs. 50,000/= (Fifty thousands only)
From Aizad Malik Bhai "U.A.E" (in bank): Rs. 14,000/= (Fourteen Thousands only)
From Dr. Hasnat "Islamabad" (Easy Pesa": Rs 25,000/= (twenty five thousands only)
Total amount received: Rs.  1,23,500/= (One lac, twenty three thousands & five hundred only)

Medicines, Clothes, Drinking Water, Food stuff:
Purchasing:
Drinking Water: 1200 liter (Rs. 25/= for bottle) 25 x 1200 = Rs. 30,000/=
Medicines: Worth of Rs. 80,000/= (eighty thousands only)
Conveyance, transportation: Rs. 10,000/= (Ten thousands only)
Total Expensive: Rs. 12,00,00/= (One lac & twenty thousands only)
Remain in bank at on 29-09-2011: Rs. 3,500/= (Three thousands & five hundred only)

Donation:
Medicines, Clothes, Drinking water, Food stuff:
Edhi Trust "Abdul Sattar Edhi Sahib":  Shroud "Coofan". 1000 nos.
Ms. Badar Un Nissa: Clothes: for 500 women, for 500 children.
Mr. Ehsan Mumtaz: Food Stuff: Worth of Rs. 10,000/= (Ten thousands only)
Ms. Aliya Imam: Medicines: Worth of Rs. 20,000/= (Twenty Thousands only)
Mansoor Ahmed. Clothes. for 150 children's.
Faryal Zehra. Medicines: worth of Rs. 25,000/= (Twenty five thousands only)

Al Hamd Ul ALLAH,
We have served more then 2000 (two thousands) Women & Children victims of the flood and two babies also had born in our field medical camp is in the area of Samaro, Badin, Sindh.

Team Ashiyana is working with the same spirit and hard working for the flood victims and we are here till our brother & sister are here in this situation - Insha ALLAH.

Another thing need to be noted: We have sold out our camera's, laptop and expensive mobile phone which were the only wat to get in toush with out friends and family members. One of the volunteer Farhan Bhai (Szabist - Karachi) told us to bring his laptop and other's diveces which may be availablable at the end of this week. We might be able to update our pictures and other stuff onwards - Insha ALLAH.

In last, we are thankful to all of our friends, and family members to trust on us. and to give there strong hand of the courage to work with these victims as hunderds of thousands still are in danger.

We still required:
Medicines: In Huge Quantity
Drinking Water: In huge Quantity
Clothes: if available
Food Stuff: if available
"Our first priority to serve these victims with drinking water & medicines.


اپنے تمام دوستوں سے شکریہ اور اس دعا کے ساتھ ک ہمارا رب ہماری اس چھوٹی سی محنت کو اپنی بارگاہ مے قبول فرماے، اور ہم کو ہمت، حوصلہ اور صبر ک ساتھ یہاں کام کرنے کی توفیق عطا فرماے. الله پاک ہمارے لئے غیب سے اسباب فراہم فرماے، اور ہمارے اس مشکل سے گھرے بھائی بہنوں کو جلد از جلد پھر سے خوشالی اور عزت احترام عطا فرماے، امین
آپ سب کہ شکر گزار
سید عدنان علی نقوی اور دوست
ٹیم آشیانہ، سومارو، بدین. سندھ
 


Monday, September 26, 2011

Team Ashiyana: Relief Efforts For The Vicitms of The Flood in Sindh and IDP's: Waiting for the report from Team Ashiyana, Badin - Sindh.

Team Ashiyana: Relief Efforts For The Vicitms of The Flood in Sindh and IDP's: Waiting for the report from Team Ashiyana, Badin - Sindh.

Waiting for the report from Team Ashiyana, Badin - Sindh.

Assalam O Alikum

With sorry, still didn't get any contact with Syed Adnan Ali Naqvi Bro, Faryal sis or any other members of the Team Ashiyana, from Badin. Last contact was established at 5pm they were on the way for Mora area in Badin.
Details of the relief work will be uploaded and e-mail shortly. Insha ALLAH.

Jazak ALLAH
Mansoor Ahmed
Volunteer,
Team Ashiyana: Relief Efforts for the Victims of the flood in Badin - Sindh.
Syed Adnan Ali Naqvi & Friends.
mansoorahmed.aaj@gmail.com
+92 333 342 6031




Saturday, September 24, 2011

Team Ashiyana: Badin Sindh!

اسلام و علیکم
آپ سب پر الله کی جانب سے سلامتی اور رحمت ہو، آمین.
سید عدنان علی نقوی / سیدہ فریال زہرہ کی رپورٹ براۓ سیلاب زدگان بدین، سندھ
ٹیم آشیانہ، مقام: چھا چھڑ، بدین. سندھ.

کل جمہ مبارک تھا، ہم صبح کے لئے بہت بڑے امتحان کا دن. ہماری ٹیم کے حالت ک بارے میں تو ہم لکھتے ہی رہتے ہیں اور تھوڑا بہت یہاں کے حالت کا بھی لکھتے ہیں. مگر پچھلے ٢ دن سے ہم بہت زیادہ مایوسی کا شکار رہے ہیں. کیوں کے جب ہمارے سامنے بہت سارے لوگ ہوں جن کو پینے کے لئے صاف پانی کی ضرورت ہو اور بیماری میں دوا کی ضرورت ہو اور ہم کچھ بھی نا کر سکیں تو صبر بھی نہیں آتا اور ہمت اور حوصلہ بھی جواب دے جاتا ہے. کراچی سے منصور بھائی نے اپنا پورا یقین دلایا اور فریال نے بھی اپنے کونٹکٹ کو استمال کیا اور رات تک کچھ امید نظر آی. بیرون ملک پاکستانی بھائی اور بہنوں کی طرف سے بھی کچھ امداد ملنے کی امید ہے. منصور بھائی اور فریال بتا رہے ہیں کے انشا الله امید نہیں یقین ہے. الله پاک ہمارے اس یقین کو کامیاب کرے، آمین. مشکل یہ ہے کے جہاں ہم جاتے ہیں وہاں کوئی اور نہیں جاتا مطلب یہ کے ہم نے کل جس جگہ کا وزٹ کیا واپس آکر حکومتی اداروں کو بتایا اور جو بھی سامنے آیا اس کو بتایا کے بھائی ہم اس جگہ جا کر آے ہیں وہاں فوری ادویات کی ضرورت ہے اور کچھ خواتین حاملہ  ہیں جن کو مدد چاہیے مگر ابھی تک وہاں کوئی نہیں پہنچا بلکے وہاں سے کچھ لوگ آج صبح ٢ خواتین کو لے کر آے ہیں جن میں سے ایک خاتون نے اب سے کچھ دیر پہلے ہمارے ٹوٹے پھوٹے سے کمپ میں ایک بہت پیاری سی بچی کو جنم دیا ہے. الله پاک ہی ہم سب کی مدد کرنے والے ہیں جو فریال اور کچھ خواتین نے مل کر یہ کام سر انجام دیا. ماں کی حالت تو کافی بہتر ہے مگر بچی کی حالت کچھ زیادہ بہتر نہیں. پھر بھی ہم کوشش کر رہے ہیں کے اس بچی کو جتنا جلدی ممکن ہو کسی اسپتال منتقل کر دیا جاۓ. یہ تو صرف ایک بچی کا معاملہ ہے ایسی بہت ساری خواتین یہاں ہیں جن کو فوری طبی امداد کی ضرورت ہے. رات جب میں فریال اور ہمارے والنٹیر ایک ساتھ بیٹھے تھے تو ہم اسی بات کو سمجھنے کی کوشش کر رہے تھے کے اب ہم لوگوں سے کیا مانگیں؟ ان سے یہاں کے لوگوں کے لئے پانی کی بھیک مانگیں؟ ادویات کے لئے ھاتھ پھیلائیں، کرے، یا کھانا مانگیں یا پھر ابھ جو لوگ بس مرنے ہے والیں ہیں ان کے لئے کفن کے لئے بھیک مانگیں؟ الله پاک سے دوا ہے کے ہم کو اس بورے وقت سے پہلے یہاں سے نکل یا پھر ..... مشکل ایک نہیں ہے بلکے ہزار ہیں؟ افسوس کے جن ک پاس دوا ہے وو دوا دیتے نہیں بلکے بچتے ہیں بلکے اور زیادہ مہنگی قیمت پر، یا پھر دوا ہی دستیاب نہیں ہوتی. پانی جو کے الله پاک کا ایک انعام ہے وہ بھی اب خریدنا پڑھ رہا ہے. کھانے پینے کی اشیا کا تو پوچھنا ہی محال ہے. ابھ ایسے میں یہاں کے بارے میں کیا لکھوں؟ کیا کہوں؟ کیا بتاؤں؟ کیسے کہوں کے سب اچھا ہے! جب کے یہاں تو سب گلت ہے ہو رہا ہے. بدین شہر آکر پتا چلا کے حکومت اور ایک این جی او نے کچھ ٹرک سامان بھیجا ہے. مگر آفریں ہو یہاں کے سیاسی لوگوں پر کے ٹرک آتے ہوۓ تو لوگوں کو کی نظر آے مگر گے کہاں اس کا جواب تو تک لانے والے، یہ سیاسی لوگ یا پھر یہاں کے عوام ہی دے سکتے ہیں، ہم لوگ اس سے زیادہ اور کچھ نہیں کہ سکتے. مجھ کو صرف اتنا کہنا ہے کے جب تک ہم ایک قوم بن کر اور ایک جن ہو کر نہیں سوچیں گے کچھ نہیں ہونے والا. پتا نہیں ہم پاکستانی اکھڑ کب تک صرف سوچنے کا کام کرتے راہیں گے، عمل کرنے کے وقت سب ادھر ادھر ہو جاتے ہیں اور ہم سب کے ساتھ اسی مجبوریاں ہو جاتی ہیں کے یہاں ذکر کرنا تک محال ہے
عرض یہ ہے کے میری بہن فریال، نگہت، اور بدر انسا اور میں خود بخار، میں مبتلا ہو چکے ہیں. ابھی تک عیسیٰ ہی لگتا ہے کے جیسے تھکن اور بے آرامی کی وجہ سے ہوا ہے. آپ صبح دوستوں سے د عا کی اپیل ہے.
آج کے ضرورت کے سامان کی لسٹ کچھ اس طرح سے ہے
ادویات براۓ بخار، پیٹ کے امراض، جلدی امراض
پینے کہ صاف پانی
کچھ کھانے پینے کی اشیا
بچوں کے لئے کپڑے اگر دستیاب ہو سکیں

آج کے فنڈز کی تفصیل جو کے منصور بھائی اور فریال باجی کی معرفت موصول ہوۓ یا ہونے والے ہیں
بنک میں جمع ہونے والی رقم: پاکستانی ساٹھ ہزار، چار سو روپے. ابھی بنک میں وصول نہیں ہوۓ
نقد وصول ہونے والی رقم: پاکستانی دس ہزار روپے
ادویات جو کے کچھ خریدی گئیں اور کچھ عطیات میں ملیں: پاکستانی پندرہ ہزار روپے
پینے کہ صاف پانی: پندرہ سو لیٹر



ان سب میں مدد کے لئے میں اور میری ٹیم میں شامل تمام لوگ شکر گزر ہیں جناب ایزاد بھائی، ابو دھہبی. جناب فرحان بھائی، لندن / کراچی، شہید ذالفقار علی بھٹو انسٹیٹوٹ آف ٹکنا لو جی، بیکن سکول سسٹم، کے شکر گزر ہوں کے انہوں نے اپنا وقت دیا اور اپنی کوشش کر کے ٹیم آشیانہ کے لئے کام کیا. الله پاک ہم سب کی کوششوں کو قبول فرماے، آمین -
مزید تفصیلات کے لئے آپ رابطہ کر سکتے ہیں

سید عدنان علی نقوی
00923452971618
منصور احمد
00923333426031
سیدہ فریال زہرہ
   00923132798085





Friday, September 23, 2011

With sorry of Waziristani Brother, Sisters & Kids

اسلام و علیکم
میں اپنے وزیرستانی بھائی، بہنوں اور بچوں کے آگے شرمندہ ہوں کہ میں وعدے کے مطابق نا ہی ان کے لئے کچھ کر پا رہا ہوں نا ہی اپنے سندھ مے سیلاب زدگان، بھائی، بہنوں ک لئے ہی کچھ کر پا رہا ہوں. الله پاک سے دعا کرتا ہوں کے وہ مجھ کو اسے اسباب فراہم کرے کے مے اپنے بھائی بہنوں اور بچوں کے لئے بہت کچھ کر سکوں. آج عدنان بلکل خالی ہاتھ بیٹھا ہے اور مدد کہ منتظر ہے. وزیرستان میں آشیانہ کمپ میں رہنے والے بچے یہ نا سمجھے کے میں ان کو بھول گیا ہوں بلکے میں یہاں اپنا کام ختم کر کے فر اپنے بچوں کے پاس ہوں گا، انشا الله.
میرے لئے دعا کرنا.
محتاج
سید عدنان علی نقوی

Help the victims of flood in Sindh (For the sack of ALLAH Almighty)

اسلام و علیکم
محترم، سب سے پہلے تو میری حالت، جو یہاں اکر تھودا سا خراب ہو گے ہے، یہاں پینے کہ تو کیا عام استمال کہ پانی بھی دستیاب نہیں، ہم اپنے دوستوں سے اور جو جو یہاں آرہا ہے اس سے پانی کی بھیک مانگ رہے ہیں مگر نہیں مل رہا. یہاں پیٹ کی بیماریاں بہت تیزی سے پھیل رہی ہیں، نہ تو ڈاکٹر ہیں نہ ہے ادویات، جانے ہماری قوم کو کیا ہو گیا ہے، کل تک جو ایک ہوا کرتے تھی آج ایک دوسرے کی طرف دیکھ رہے ہوں. دوسروں پر بھروسہ کرنہ نہیں چاہتے، خود سامنے آکر کام کرنے سے ڈر رہے ہیں. آخر ایسا کیوں؟ ہمارے بہت سارے بھائی اور بہنیں بہت اچھی ترہان جانتی ہیں کے یہاں کیا ہو رہا ہے، انسانیت کے نام پر لوگ ایک دوسرے کہ خون پی رہے ہیں، انٹر نشینل میڈیا، ادارے روزانہ بتا رہے ہیں کے یہاں کی لوگ کس مشکل میں ہیں، مگر افسوس ہمارا میڈیا اور خود ہم ایک دم سے بے حس بن کر بیٹھ گے ہیں. ہم حکمرانوں کو تو یہ کہتے ہیں کے "شرم تم کو مگر نہیں آتی" لیکن ہم خود کتنی شرم اور ذمداری سے کام لے رہے ہیں اس کہ احساس کرنے کو تیار ہے نہیں. ہمارے دوست ایک بوتل پانی تک دینے کو راضی نہیں ہیں. کیا الله پاک کی ذات سے امید ختم ہو گے ہے یا ہمیشہ کی ترہان کسی آسمانی مسیح کہ انتظار کر رہے ہیں؟ خدارا کچھ کریں نہیں تو بہت دائر ہو جاۓ گے، یہی وقت ہے کہ ہم ایک قوم ہونے کہ ثبوت دیں، بغیر کسی نسل، ذات، زبان، سیاسی یا مذہبی گروپ سے تعلق کے ہم صرف ایک قوم ہو کر اپنے بھائی بہنوں کی مدد کریں. میں صرف سن رہا ہوں ک کسی پا رٹی نے یہ کیا وہ کیا، حکومت بھی اپنا کہ رہی ہے مگر کوئی یہاں آکر تو دیکھے کے یہاں ہو کیا رہا ہے؟ کتنے ہی لوگ پینے کے پانی سے محروم ہیں، ہزاروں کو ادویات نہیں مل رہی ہیں، حد تو یہ ہے ک جو مر رہے ہیں ان کے پاس کفن تک نہیں ہے. بچے اور عورتیں ادھر ادھر بھگ رہے ہیں کے شاید کہی سے کچھ مل جاۓ، یہ لوگ امداد کے نام پر ہم سے پانی مانگتے ہیں، دوائی مانگتے ہیں، مگر ہمارے پا دینے ک لئے کچھ نہیں ہوتا، خود مے بیمار ہوں مگر میرے پاس صرف سر درد کی دوا ہے اور کچھ نہیں. پتا نہیں ہم کو کابھ ہوش آے گا. میری تو دوا یہی ہے کے کاش کے اسی آفتیں ہمارے سارے پاکستان میں آے، تاکے وہ  جن کو کچھ احساس نہیں ہے وہ جن کے بچے اسے بیمار نہیں ہیں ان کو یہاں کے  لوگوں کی تکلف اور مصائب کہ اندازہ ہو سکے، مے تو لکھ سکتا ہوں، یہاں کے حالت بتا سکتا ہوں، اپنے دوستوں سے دوا کی اپیل کر سکتا ہوں، ان سے مدد کی بھیک مانگ سکتا ہوں اس کی علاوہ یہاں بیٹھ کر یہاں کے لوگوں کی ساتھ اظھار یکجہتی کر سکتا ہوں ہوں، اس کے علاوہ اور کیا کروں؟ صرف ایک واقعہ لکھوں گا جو یہاں دیکھا اور اپنی بے بسی پر بہت رونا آیا. اے کاش کے میں انسان نہ ہوتا
  
بدین کہ ایک چھوٹا سا علاقہ "چاچڑ" یہاں لگ بھگ ٧-٨ ہزار لوگ رہتے ہیں. پورا پانی میں ڈوبا ہوا تقریباً ٣ فٹ پانی وہ بھی خراب، بدبو دار. یہاں کے لوگ اسی پانی کو پینے پر مجبور ہیں، یں کے پاس نہ ہے خانے کو کچھ ہے نہ ہے پینے کو ، یہاں کے سارے بچے پیٹ کی بیماریوں میں مبتلا ہیں، بکھر، الگ ہے، ١٠٠ سے زیادہ بہنیں حاملہ ہیں جن کو یہ نہیں پتا ک ابھ کیا ہوگا. مے جب یہاں اپنی میڈیکل ٹیم کے ساتھ آیا تو میرے پاس صرف کچھ ہی ادویات تھیں، جن ا صرف ٣٠- ٣٥ بچوں کو ہے دیکھ سکا. باقی بہت سارے بچے دوا سے محروم رہے. مے رویا مے نے اپنے دوستوں سے رابطہ کیا مگر ابھی تک صرف تسلی ملی کوئی عملی قدم نہیں اٹھایا گیا. کیا ہم اتنے ہے بے حس ہو چکے ہیں. انسانیت کے ٹھیکیدار اسلام آباد میں بیٹھ کر صرف باتیں کر رہے ہیں، کراچی والے کہتے ہیں کے یہ ہمارا مسلہ نہیں کیوں کے یہاں تو سیاست بھی الگ انداز سے ہوتی ہے. جہاں تک میں سمجھا ہوں سیاست تو عوامی خدمات کہ دوسرا نام ہے اور اگر مے گلت سمجھ رہا ہوں تو لگتا ہے کے سیاست اپنی اجرا داری کو قائم کرنے کہ نام ہے، اپنی ریاست بنانے کہ نام ہے اپنی حکومت اور خود کو امیر سے امیر کرنے کہ نام ہے. مجھ کو اچھی ترہان یاد ہے جبہ زلزلے نے سری قوم کو ایک کر دیا تھا مجھ کو بہت سارے دوستوں نے فونے کیا اور کہا کے عدنان بھائی تم خود کو اکیلا نہ سمجھنا ہم تمہارے ساتھ ہیں، یہ کام ایک دن کہ نہیں بلکے سالوں کہ ہے مگر افسوس کے صرف چند دوست ہے رابطے میں رہے باقی صبح زمانے اور وقت کی ہوا کے ساتھ پتا نہیں کہاں گم ہو گے. شاید میں ان کووہ پبلسٹی نہیں دے سکا جو دوسروں کو مل رہی تھی. مے نے اپنا سفر الله پاک کے نام سے شروع کیا، کشمیر گیا، خیبر پختوں خوا گیا، وزیرستان گیا، پنجاب گیا اور مے جو کر سکتا تھا کیا، اپنے سفر سے اپنے دوستوں کو اگاہ رکھنے کی کوشش کاری، بہت مشکل اٹھائی پریشانی اٹھائی مگر اپنے سفر سے نہیں روکا. اس امید پر ک لوگ مجھ کو نہیں دیکھ رہے میرے کام کو دیکھ رہے ہیں. مگر آج مے کمزور پڑھ رہا ہوں، میری امید اور کوشش مجھ کو ناکام ہوتی نظر آرہی ہے میری محنت اور کام عیسیٰ لگ رہا ہے ک جیسے سچ میں پاگل ہے ہوں جو خود کے لئے کچھ نہیں کر سکا. بلکے اس کام میں اپنا جو بھی تھا ختم کر دیا. مے یہاں آپ سے اپنی خدمات کہ ذکر نہیں کروں گا. کیوں ک جو بھی کیا الله پاک کہ نام لے کر کیا اور کر رہا ہوں. مگر مے اکیلا کچھ بھی نہیں کر سکتا. مے یہاں انسانوں کو اسے بھوکا.، پیسہ، سسکتا، بلکتا نہیں دیکھ سکتا. نہ ہے مے خود کو روک سکتا ہوں کے کچھ نہ کروں. میں نے بہت مجبوری میں میڈیا کے دوستوں سے بھی رابطہ کیا، مختلف فلاحی اداروں سے بھی رابطہ کیا مگر صبح کہتے ہیں کے ہم کوشش کر رہے ہیں. ہم کر رہے ہیں مگر کیا کر رہے ہیں یہ ناں تو میری سمجھ مے آرہا ہے نا ہے کچھ دیکھ رہا ہے. ہو سکتا ہے کے میرے الفاظ آپ کو گلت لگیں، مگر میں کیا کروں، مے خود کو بہت مجبور سمجھ رہا ہوں، اپنی چھوٹی  سی ٹیم لے کر کابھ تک بیٹھا رہوں، جب کے ہم بہت کچھ کر سکتے ہیں، اور کرنا چاہتے ہیں مگر ہمارے پاس نا تو فنڈس ہیں اور نا ہے پانی نا ہی ادویات  اسے مے اگر ہم کریں بھی تو کیا؟ کیا ہمارے دوستوں میں سے کوئی بھی ایسا نہیں جو ہماری مدد کر سکے، ان انسانوں کے لئے خود اس تھودا بہت کچھ کر سکے؟ یا ہم صبح صرف باتیں ہے کر سکتے ہیں عملی قدم اس لئے نہیں اٹھا سکتے کے ہم کو کسی پر بھروسہ نہیں ہے؟ میں یہ نہیں کہتا کے آپ اپنی امداد ہم کو دیں، ہم کو کپڑا، کھانے پینے کی اشیا، ادویات یا رقم دیں، مے صرف آپ سے اتنا عرض کرتا ہوں ک آپ جو بھی کرنا چاہتے ہیں آپ خود شریک ہوں، ہماری ٹیم کہ حصہ بن جائیں، یا خود اپنی ایک ٹیم بنا کر یں علاقوں میں جائیں، اور دیکھیں کے کتنے لوگ ہیں جو آپ کی مدد کے منتظر ہیں، کنے ہے بچے ہیں جن کو یہ نہیں پتا ک ان کو کھانا کب ملنا ہے. کتنے ہی لوگ ہیں جو یہ نہیں جانتے کے ان کو دوا ملے گی بھی کی نہیں
مے تو صرف ایک ذریع بن سکتا ہوں. ہم اپنی سچائی کہ یقین دلانا نہیں چاہتے کیوں ک الله پاک اپنے کام کرنے والوں کو شاید اسے ہے آزماتا ہے مگر میرا یمن ہے، مجھ کو یقین ہے کے الله پاک نے اگر ہم کو یہاں بھیجا ہے تو ہماری مدد بھی ضرور کرے گا اور کوئی نا کوئی یہاں اے گا . جو یہاں کے حالت کے لئے کچھ نا کچھ ضرور کرے گا. انشا الله.

ابھی یہاں کن چیزوں کی ضرورت ہے ان کی کچھ تفصیل لکھ رہا ہوں اس امید پر ک ہم صبح مل کر زیادہ نہیں تو تھودا بہت کچھ نا کچھ کر سکتے ہیں. مجھ کو اور میری ٹیم کو آپ کی دعاؤں کی اور مدد کی بہت ضرورت ہے. خدارا ہم کو اسے تنہاں  نا چھوڑیں کے روز حشر ہم دست و گریبان ہوں. الله پر پورا یقین رکھتے ہوۓ ہماری ٹیم کی مدد کریں، کے ہم آپ کی امداد کہ ایک ایک حصہ صرف اور صرف یہاں کے لوگوں کے لئے ہے استمال کرے گے. اور ایک دن ہم جب آپ کے سامنے پیش ہونگے تو انشا الله سرخرو رہے گے.

انتہائی ضرورت کی اشیا
پینے کا صاف پانی. جتنی مقدار دستیاب ہو سکتی ہو
پیٹ کے امراض کی ادویات، بخار، جلدی امراض کی ادویات
حاملہ خواتین کے لئے ادویات
بچوں کے لئے کپڑے اور کچھ کھانے پینے کی اشیا
دیگر مے جو بھی آپ دے سکتے ہیں.

اگر آپ ہماری ٹیم میں شامل ہو کر یہاں کے لوگوں کی مدد کرنا چاہتے ہیں تو ہم سے رابطہ کریں.

سید عدنان علی نقوی
 00923452971618
سیدہ فریال زہرہ

00923132798085
منصور احمد
00923333426031
فیصل بھائی
00923238466089
نبیل بھائی
0092342650964

جزاک الله
سید عدنان علی نقوی اور دوست
ٹیم آشیانہ براۓ سیلاب زدگان بدین سندھ.




Tuesday, September 20, 2011

List of the Urgent Required Medicines. (urgent response required)


Assalam O Alikum,

A shortlist of the medicines required for the flood victims in Badin Sindh.
Here is an email with the shortlisted medicines which immediately required for the victims of the flood.

Once again, we are not is in the position to purchased heavy amount of these medicines but we are in try to give all of our output to medicated in first hand to the victims who are visiting us.

List of the medicines.
Syrups:
Calpol, Septran, Mucane, Ulsanic, Gestofil, Gravinate, Marzine, Promethazine, Flyzol / Flygel, Panadol, Ponstan Fort.
Augmenten, Velosef, Amoxil etc

Tablates:
Panadol Cf / Extra, Ponstan Fort, Peracetamol, Flygel, Bascopan, Lomotive, Marzin, Trisil / Gelosil, Gravinate, Rijix, Metodine, D.F, Velsosef, Augmenten, Amoxil etc

Seriel:

O.R.S, Peditral Water, Dexta Drips, T.T, Dyclo, Pain killer injections.

Other:
Cotton, Bandage, Pyodine, Syringes, etc.

Brother, the above mentioned medicines are required at on the urgent basis, as we are purchasing them from our resources but they are all very limited the status of donations and funding is also not very good here. We don't know what are poeple awaiting for. As they are not interested to give relief to the victims.

Now, we are making a plane to start a bheek mission in Karachi and Hyderabad. may with this we can get some more donations for the victims.


An urgent response is awaiting for. "If anyone there who can arrange these medicines for our medical camp."

Jazak ALLAH
Faryal
A team member of Syed Adnan Ali Naqvi & Friends.
Team Ashiyana for the relief efforts for the victims pf the flood in Badin. Sindh.
http://ashiyanacamp.blogspot.com



Sunday, September 18, 2011

Flood Report: Team Ahshiyana working report in Badin, Sindh, Pakistan.

الله سے جب بھی مانگو بھروسے کے ساتھ مانگو کیوں کہ وہ تب بھی دیتا ہے جب تم نہیں مانگتے،تو کیسے ممکن ہے کہ تم کچھ مانگو اور وہ عطا نہ کرے.
اسلام و علیکم
دوستوں نے کہا ک جو تم لوگ بدین یا سیلاب سے متاثرہ علاقوں مے کام کر رہے ہو اس کا بھی لکھو، وہاں کی حالت بتاؤ، تم نے کیا کیا اور تم نے کیا ہوتے دیکھا وو بھی لکھو، وقت کی کمی بہت ہے، ہزاروں لوگ ہیں، کام کرنے والے بہت کم تو جتنی کوشش ہو سکے گے ضرور لکھے گےمگر بہت کچھ لکھا نہیں جا سکتا وہ تو صرف محسوس کیا جا سکتا ہے، دیکھا جا سکتا ہے. میرے خیال سے یہاں اکر حالت کو خود سے دیکھ لینا زیادہ بہتر ہوگا نا کے میرے لکھے ہووے کو پڑھا جاۓ، اور افسوس کر کے اپنے کاموں میں مصروف  ہو جائیں.، ہم نے اس ہفتے میں کیا کیا اس کی تفصیلات دینا لازم ہیں کیوں کے ابہ ہم فلحال کسی اسی جگا موجود نہیں جہاں سے انٹرنیٹ یا فون کا رابطہ ممکن نہیں. میں شکر گزر ہوں اپنی بہیں فریال زہرہ کا جس نے مجھ کو یہ سہولت فراہم کاری کے میں لکھوں یا بولوں اور میرے الفاظ کو دوستوں تک منتقل کرے، الله پاک ہماری پوری ٹیم کے کم کو قبول فرماے اور تعمیر پاکستان سے تکمیل پاکستان تک کا جو خواب ہم نے دیکھا ہے اس کو پورا فرماے امین.
یہاں انے کا مقصد یہاں کے حالت کو جاننا تھا پھر یہاں کے حالت دیکھتے ہووے اور کراچی کے دوستوں کے اصرار پر ایک ٹیم بنا دی گے کے سیلاب متاثرین کے لئے جو کچھ کر سکتے ہیں کر سکیں، امید تو یہ تھی ک سیلاب سندھ میں آیا ہے اور کراچی، حیدرآباد، جیسے شہر خریب  ہیں تو یہاں امداد بھی آے گے اور دوست بھی آسانی سے کم کر سکے گیں مگر آج یہ دیکھ کر بہت ہے دکھ اور افسوس ہوتا ہے کے ہم نے تو کچھ سمجھا ہے نہیں کے کتنی بڑی آفت آگی ہے. ہم لوگ میڈیا کا شکوہ کرتے ہیں مگر خود اپنے آپ کو دیکھنا نہیں چاہتے. ہن ایک کام بہت آسان ہے وو یہ کے الله پاک مدد فرماے، الله پاک معاف فرماے، الله پاک سیلاب متاثرین کے لئے آسانی فرماے، اعمال کا نتیجہ ہیں، حکمران بے حس ہو چکے ہیں، یہ سب کہنا بہت آسان ہے مگر خود آگے بڑھ کر عمل کرنا شاید بہت مشکل. اپنی آج کی اس رپورٹ میں ہم پوری کوشش کرے گے کے حالت کی آگاہی  جتنی دے سکتے ہیں دیں، ہم تو مدد کرنے والے لوگ ہیں امداد کرنا آپ کہ کام ہے اور توفیق، ہمت، حوصلہ عطا کرنا الله پاک کہ کام. امید کرتے ہیں کے الله پاک ہماری اس کوشش کو قبل کرتے ہوۓ ہم کو حوصلہ، ہمت اور توفیق عطا فارمے گا، اور ایک قوم ہونے میں ہماری  مدد فرماے، امین
محترم ہم نے یں کچھ دنوں میں کیا کام کے اور کتنی امداد تقسیم کاری اس کی تفصیل کچھ اس ترحان سے ہے.

Team Ashiyana: Relief efforts for the flood victims of
Badin, Sindh, Pakistan.

Details of Funds: (from September 12th till September 17th, 2011)
Funds (In cash): Rs. 60,000/= (Sixty thousands only – Donated by friends)
Bank transfer: (Nil)

Mineral (Drinking Water): 4350 litter, (In bottles and Can)
Medicines: Worth of Rs. 58,000/= (Fifty eight thousands only – Purchased by above mentioned amount)
Food stuff: Dates (Khajoor) 50kg, Biscuits 15kg, others (limited quantity)
Clothes: Nil.

Funds Status on September 18th 2011
Funds (in Cash): Nil
Bank Transfer: Rs. 20,000/= (Twenty thousands) b/w transaction.

Mineral (Drinking) Water:  800 litters (on the way from Karachi)
Medicines: Worth of Rs. 10,000/= (Ten Thousands) "On the way from Karachi".
Food Stuff: (Nil)
Clothes:  A few of for kids and women (not sure about the exact quantity as on the way from Karachi".

Team Ashiyana: (At on September 18th 2011)
Syed Adnan Ali Naqvi
Syeda Faryal Zehra
Mohammad Nadeem
Faisal Malik
Dr Arjumand Siddiqui
Farhat Ismael
Owais Ahmed
Raes Ahmed
Nabil Rizvi
Osama Qadri
Anila Begum
Badar Un Nisa
Meher Un Nissa


ہم یہاں جو کر رہے ہیں اس کی تفصیلات دے رہے ہیں اور جو کرنا چاہتے ہیں وو آپ سب جانتے ہیں، ہم کو ابھی پینے کے صاف پانی کی بہت ضرورت ہے، اس کے علاوہ ادویات کی بھی بہت کمی ہے.. ہم ایک دفع پھر آپ سے اپیل کرتے ہیں کے آئین اور ہمارا ساتھ دیں ایک عیسیٰ کام جس کو کر کے آپ خود بھی خوش ہونگے اور ہمارا رب بھی، یہ ہمارا مذہبی فریضہ ہے ہماری قومی ذمداری بھی. ہم کو آپ اپنے پورانے کپڑے خصوصاً بچوں اور خواتین کے لئے دے سکتے ہیں، ہم کو پینے کہ صاف پانی دے سکتے ہیں، ادویات دے سکتے ہیں، خانے پینے کی اشیا دے سکتے ہیں، اور اس کے علاوہ اگر آپ ہماری مددد کرنا چاہیں تو ہم سے رابطہ کریں. آپ خود بھی ہماری ٹیم کہ حصہ بن سکتے ہیں، ہم یہ وداع تو نہیں کرتے کے آپ میڈیا پر او گے یا ہمارا کوئی فوٹو سسسیوں ہوگا مگر یہ وداع ضرور کرتے ہیں کے ہمارے ساتھ گزارا ہوا ایک ایک لمحہ آ آپ کو یاد رہے گا اور آپ سری امر الله پاک کے آگے اور سری قوم کے آگے سرخرو رہو گے.
ٹیم آشیانہ کہ حصہ بننے یا ہماری مدد کرنے ک لئے ہم سے رابطہ کریں: 

سید عدنان علی نقوی: s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
منصور احمد: mansoorahmed.aaj@gmail.com
سیدہ فریال زہرہ: faryal.zehra@gmail.com
محمّد ندیم: nadem.mohd@hotmail.com
اگر اپ ہم سے بات کرنا چاہیں تو ہم سے رابطہ کریں.
+92 345 297 1618
+92 333 342 6031
+92 313 297 1618
+92 334 228 9783
جزاک الله
سید عدنان الی نقوی.
ٹیم آشیانہ، بدین، سندھ

Saturday, September 17, 2011

Volunteer Required for Team Ashiyana in Badin (Sindh)

اسلام و علیکم
سید عدنان علی نقوی اور ٹیم آشیانہ کو سیلاب سے متاثرہ سندھ کے علاقے بدین میں اپنے فلوڈ ریلیف ٹیم کے لئے فوری
ضرورت ہے، جن میں ڈاکٹر، مرد اور خواتین نرسس، پیرا میڈیکس، کی فوری ضرورت ہے، سلب سے متاثرہ ہزاروں افراد مختلف بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں، یہاں، پینے کے صاف پانی، ادویات کی بلکل نہیں ہیں
ہم انسانیت کے نام پر تمام پاکستانی بھائی اور بہنوں سے اپیل کرتے ہیں کے مشکل کے اس لمحے میں اپنے بھائی بہنوں کو اکیلا نہ چھوڑے، آج آپ کی دی ہوئی ایک دوا ایک بوتل پانی یہاں کسی کی جن بچا سکتی ہے. ٹیم آشیانہ مے شامل ہونے کا لئے ہم سے رابطہ کریں اور آج ہی انسانیت کی خدمات میں شامل ہو کر دوسروں کے لئے مشعل راہ بنے، یقین رکھیں یہ صبح اتنا مشکل نہیں جتنا کے آپ سمجھتے ہیں یا سوچتے ہیں، آپ کے دے ہووے کچھ لمحات ہم کو مضبوط کر سکتے ہیں اور بہت سری جانوں کو بچانے کے کام آسکتے ہیں.
جزاک الله

Assalam O Alikum,
Syed Adnan Ali Naqvi & Team Ashiyana is working in Badin (Sindh) "the highly effected area by flood". Urgently looking for the volunteers in the following categories; Interested friends are requesting to be contact on the given below ASAP!

  • Male & Female Doctor (High Priority)
  • Male / Female Nursing staff (High Priority)
  • Para Medics (Male / Female)
  • Volunteers for general works i.e; Packing, supply, distribution, Rescue & Relief etc (Urgently required)
Teacher's, Students, Labor, Worker, Executive, Social Worker, Political Worker are all welcome to join us with warm heart as we are here to serve humanity, to serve Pakistani only on the name of ALLAH Almighty.
Please join Team Ashiyana which is working already in the effected areas with very low number of the volunteer's.
We are not looking for you for a long time to stay with us, just spend the time as per your availability as Badin (Sindh) is just a few miles ahead from Karachi and Hyderabad, friends can join us easily for a short term period individually or in group.
The victims of the flood are waiting for your hand of courage. We are waiting for your call, text or email.

For our work and status please visit our link;
http://ashiyanacamp.blogspot.com
http://www.facebook.com/media/set/?set=a.10150321675539474.367029.537954473&type=1

http://www.allvoices.com/contributed-news/10364092-volunteer-required-for-flood-effected-badin-sindh

To work with Syed Adnan Ali Naqvi "Team Ashiyana".
+92 313 279 8085
+92 345 297 1618
+92 333 342 6031
+92 334 228 9783

Write us on;
s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
faryal.zehra@gmail.com
mansoorahmed.aaj@gmail.com
sareturn@hotmail.com

We are sure that many of our friends can join us easily and can spend a few days with the victims of the flood in Badin (Sindh).
Jazak ALLAH
Syed Adnan Ali Naqvi
Team Ashiyana
Badin, Badin - Thata Highway. Sindh.

Flood Work out in Sindh "Team Ashiyana - Badin, Sindh)

Assalam O Alikum
Please find a few of the photo collection of our workout in Badin, Sindh as many of our friends, donors, contributor wants to know that what we are doing in the pictures.
Adnan and friends are not willingly to share there work by media share in any case but this is just because of the lack of funding, and donation.
May ALLAH help us, gives us courage, passion to be continue with our work in the same spirit.
Jazak ALLAH
Syed Adnan Ali Navi & Friends
Team Ashiyana: Relief efforts for the flood victims in Badin, Sindh.
+92 313 279 8085
+92 345 297 1618
+92 333 342 6031
+92 334 228 9783
Click here to see the picutres of our relef efforts

Friday, September 16, 2011

Urgent Required Doctor, Para Medics, Nurse Volunteer's! (Most Urgently)

اسلام و علیکم
محترم، الله پاک جو ہم سب کہ ملک، پلنے والا اور رحیم ہے، جیسا کے آپ کے علم میں ہے کے آشیانہ کمپ بدین می سیلاب اور بارش کے متاثرین کے لئے خدمات سر انجام دے رہی ہے، بدین اور سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں وبائی امراض مہت تیزی سے پھیل رہے ہیں، ٹیم آشیانہ اپنے وسائل سے بڑھ کے کام کرنے کی کوشش کر رہی ہے. ہم کو متاثرین کی بہت بڑی تعداد کو میڈیکل کی سہولیات فراہم کرنے کے لئے ڈاکٹر، نرسس، اور پیرا میڈیک سٹاف کی فوری ضرورت ہے،
ہم الله کے نام پر اور انسانیت کے نام پر اپنے دوستوں، عزیزوں اور ہم وطنوں سے اپیل کرتے ہنی کے مشکل کے اس گھڑی میں ہمارا ساتھ دیں اور ٹیم آشیانہ کو اپنے کچھ وقت دیں اور بدین اکر ہزاروں بچوں، خواتین، اور مردوں کو مرنے سے بچانے میں ہماری مدد کریں، اپ کہ ایک اچھا خدام بہت سری جنوں کو بچا سکتا ہے، ہم زیادہ کچھ نہیں کر سکتے آپ کے لئے دوا کر سکتے ہیں، الله پاک آپ کو آپ کی اس خدمات کہ بہت برا اجر عطا فرمائیں گے،
آپ ہمارے اس پیغم کو جہاں تک ہو سکے پہنچائیں ہو سکتا ہے کے کچھ ڈاکٹر دوست ہم کو سے مل کر انسانیت کو بچانے میں ہماری مدد کر سکیں.
 ہم سب آپ کی مدد اور معاونت کے منتظر ہیں.
جزاک الله.


Assalam O Alikum,
Volunteer Doctors, Para Medics, Nurses needed urgently, the situation in Badin (Sindh) is extremly heart breaking, young children are dying everyday and peoples are severely affected skin problems, eye infections, gastroenteritis, and high fever. The doctor will be provided with medicines, shelter, food & security.
You can also donate medicines for the above mentioned diseases.  or as much as you can.
Please forward this message to your friends and families may be some one help better then us to the victims.

Jazak ALLAH
Team Ashiyana
Badin, SIndh.
Badin - Thatta highway.
Sindh.

s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
faryal.zehra@gmail.com
mansoorahmed.aaj@gmail.com

+92 345 297 1618
+92 333 342 6031
+92 313 279 8085
+92 334 228 9783

Thursday, September 15, 2011

Victims of Flood & Rain in Badin, Sindh. Pakistan


With The Name Of ALLAH Almighty

Assalam O Alikum,

With due respect, We are working with the victims & refuges of Rain & flood victims in Badin (Sindh), the condition is going worse day by day (moment by moment in our sense).

This is our first Report regarding our Flood & Rain relief efforts in Badin (Sindh). In this report I want to show you up a true face of the area of working, the efforts form Government, N.G.O’s, Social & Political Organization as well as The efforts made by Team Ashiyana “Syed Adnan Ali Naqvi & Friends”. Thanks ALLAH Pak that we have mobile contact access in these location at yet to inform our friends and family that where we are and what we are doing with.

Brother’s & Sister’s,
I can’t imagine this worse condition of this area, I thought that rescue is already been done we need to work with the victims & refuges, but, still a massive rescue is need to be done. Role of other agencies is null, but Pak Army can see some place to working for the rescue. A huge displacement is waiting for. More then one lac victims need to be shift from these areas to safe place. I’ve heard that many of the political parties, government agencies, M.N.A’s, M.P.A’s, Senator’s, famous social agencies are already working with this massive disaster but unfortunately I’ve never seen any one of them, may be due to my weak eye side as don’t have spectacles to wear or special goggles, microscopes to see them or might as it was just a news not more then it. Whatever I can see the efforts from the local community and a few of social worker’s.

The location where I & my team are present is on the highway known as Badin – Thatta Highway. So far not seems as highway a road where you can see a huge rush of refugees.

In Roman Urdu:
Kia likhon? kia kahon? Kia bataon? Kia sunon? Kuch samjh nahi araha. Mai hamesha buhat emotional ho jata hon, khud per se control khatam hota nazer ata hai, mind mai hazaron sawal ate hain k ye sabh tu hum khud bhi manage kar sakte hain fir hum edher udher kiun dekh rahe hain. Kis maseeha ka waits kar rahe hain? Kia Asman se koi farishton ka group aye gaa jo hum ko enn mushkilat se nikale ga. Ya zamin per he koi avtar hoga jo ane k liye bilkul tayar betha hoga. Mere mind mai bhi yea awal aya k amai akhir Waziristan se yahan kiun agaya? Kiun majbour howa k mai Sindh aon aur yahan k logon k liye bhi kaam karon? Khud ko tasali de raha hon, samjha raha hon k abh agae ho tu kuch esa kar k jao k dosron k liye missal ban jae aur yahan k logon mai bhi khud jene ki umid jag jae, Waziristan se mere yateem bache (Orphan kids – 182) ka phone aya k Adnan Bhai ap jab tak nahi ana jabh tak aap ki zaroorat wahan (sindh) mai khatam na ho jae. Yeah wo jazba hai jis k liye mai etne salon (years) se wahan kaam kar raha hon.Aur ALLAH pak k fazl o karam se aaj Mere Waziri bachon ki, Waziri Bhaiun ki, Waziri Behnon ki soch mai tabdili aye hai. I know k ye koi buhat bari kamyabi nahi hai k lakhon mai se chand log apni soch ko badal sake aur esi soch ko apne sath rakhe. Mager main e apna tayari kari aur kam kia, homework k liye khud ko sabh k sath rakha, jahan jahan meri zaroorat pari gaya aur wo sabh karne ki koshish kari jo ek Muslim hone ki waja se mujh per mere ALLAH ne farz kia tha. Aur aaj jabh mai yahan (Sindh) aya hon tu heart mai hon, pareshan hon, afsurda hon, tarhan tarha k khayalat ate hain k akhir ye sab kia hai, ye tu modern province hai jahan taqreeban zindagi ki har sahoolat hai, elm o agahi Waziristan se akhi ziada hai, Masha ALLAH peducated log yahan hakomat kar rahe hai mgr fir bhi jahalat, be emani, afra tafri Waziristan se kahin ziada. Etni k ALLAH ka azab nazil na ho tu aur kia ho. Jab Karachi puhancha tu Tv dekhne ka etifaq howa, ek show chal raha tha j sach mai ek show he tha. Ntion k educated log Tv pe baith kar ye sabit karne ki koshish kar rahe thai k ye natural diseaster hain aur kon enn ki waja hai, koi hakomat koi opposition ko ess ka elzam de raha tha, koi khud kisi bhi tarhan ki responsibility lene ko tayar nahi tha. Main buhat choota, kam elm, aur enn sab chakaron se dor rehne wala ensan hon. Jo ALLAH k asolon per zindagi guzarne ki koshish kar raha hai, Mera elm, meri maloomat tu mujh ko yehi kehti hain k Azab e ELahi, khud se nahi aya karte balke hum ensan ese asbab aur kaam kar jate hain k jin ka silla sari qoum aur umaah ko bhugatna parta hai. Aur humari sab se bari kamzoori ek he hai k hum mai se koi bhi ensan kisi bhi tarhan ki galti ki zimedari khud lene ko tayar nahi hota hai. Aur ye sabh kuch jo aaj Humare mulk Pakistan mai ho raha hai wu humari esi gair zemedari ka result hai. Jiss ko hum sab mil k azab e Elahi keh rahe hain aur abh chahte bhi yehi hain ka ALLAH pak ne he yea azab hum per dala hai aur wohi ess ko khatam kare gaa. Yad rakhe koi nahi aye ga, jo karma hai hum sabh ne mil kar karma hai, hum sab ko apni zimeari ko samjhna aur pora karma hai, na he ALLAH ne zamin par ana hai aur na hi Farishton ke koi team akar raton raat humari qismat badal k jae ge, ek qoum ho kar, ek soch k sath he ohum khud ko behtri ki taraf le ja sakte hain.
Mai buhat shukar guzar hon Mansoor Ahmed Bhai ka jinhon ne mujh ko bar bar contact kia aur mujh ko majbour kia k main yahan (sindh) aon aur yahan k halat dekho aur apni job hi khidmat hain yahan sar anajam don, mujh se mere doston ne kaha k Adnan bhai aap Waziristan camp ko tu sahi se run nahi kar paa rahe hain wahan Sindh ja kar yea dono zimedari kese pori kare ge, Mai ne kuch dair socha aur aaj bhi eohi jawab hai k ALLAH Pak hai jo meri mehnat ko dekh raha hai, mere jazbe ko deh raha hai aur mere liye raste banana wala hai aur ALLAH pak k naam se apna kaam yahan shuru kar dia. Yahan akar kuch hasil ho na ho, mgr buhat kuch sekhne ko mil raha hai, Yahan k logon k sochne ka andaz, jene ka andaz aur ek dusre k liye jazba. Ye sabh mere liye naya nahi hai mgr waqt k sath sath ek buhat bari tabdili agae hai. Sindh aur shayad pore Pakistan mai log abh ek qoum nahi apni apni community k liye ji rahe hain, khud k liye ji rahe hain k shayad ALLAH pak ny hum ko ye mulk aur ye mazhab dia he khud ki falah aur taraqi k liye hai. ALLAH pak hum sabh ko hidayat ata farmae, Ameen.
Humar har dil aziz President sahib, Honorable Asif Ali Zardari, jo aaj kal London, U.K mai apne medical check up k liye gae hain. Aur abhi tak un k wapis ane ki koi umid nazr nahi ati. Pata nahi President sahib esi kon c beemari mai mubtial hain jis ka elaj tu kujja checkup tak Pakistan mai nahi ho sakta, meri haqeer maloomat k mutabiq president of Pakistan k pass hamesha mulk k behtreen doctors ki team moujood hoti hai aur behtren medical ke saholiyat, aur agr nab hi thi tu kia un k liye dunya ka behtreen doctor Pakistan bulwaya ja sakta tha. Mai ye nahi kehta k president ko mulk se bahar nahi jana chahiye tha, mgr kia koi mujh ko ya enn victims ko ye batlae gaa k agr president sahib mulk se bahar nahi jate aur wohi sari expertise aur expensives Sindh sirf Badin district k logon k liye de diye jate tu mai pore yaqeen se kehta hon k kam uz kam yahan k logon (victims & refuges) ko medical ka first aid he mil jata, aur kuch na sahi ek din k liye drinking water tu mil he sakta tha. Mgr ALLAH pak humare president ko seht, tandursti aur lambi umer ata farmae k wo jane esi kon c beemari mai  mubtila hai k jis k sirf check up k liye un ko London jana para aur ye tu sirf chechup hai ALLAH na kare k agr ess beemari (jis ka mujh ko elm nahi) ki tasdeeq ho jati hai tu elaj wagera par kia kharcha hona hai aur hakoomat e waqt aur kitne victims ka rizq medicines cheen k un k elaj k liye kharach kare ge. Tanqeed nahi hai ye haqeeqat hai, akhrajat ke maloomat k liye agr finance ministry se contact kare tu shayad wo bhi na bata sake. Ye sirf ek missal thi, hum mai se koi bhi kisi bhi tarhan mukhlis nahi hai, koi bhi kisi bhi tarhan se ye nahi chahta k hum kuch acha kare, buss jitna apni dozakh ko bhar sakte hain bharne k liye hele bahane dhoondh rahe hain. Mujh ko achi tarhan yad hain k last president ne ek general meeting mai farmaya tha k being a parto of government hum hamesha ek nai diseaster ka wait karte hian k kuch ulta phulta ho aur international aid aye kiun k abh tu humare logon ka pait aur dozakh Pakistani rupee mai nahi bharti balke abh tu hum ko dollar & punds ke adapt ho gae hai. Aur jabh hum Waziristan, Bajour, Sindh, Khber Pakhtonkhwa, aur degar elaqon k rehne walon k liye funds ke appeal karte hain tu humara khazana bhi khali hota hai aur hath bhi khali. Esi qoum barbadi ke tarfa nahi jae gee tu aur kider jae ge. Mai fir arz e khidmat kardon k kisi ki hatak ya dil azari mera maqsad nahi hai balke sirf wo kehna hai jo mai dekh raha hon aur samjh raha hon. Mujh ko log pagal kehte hain, deewana kehte hain, flirt kehte hain, fraud kehte hain, mger ALLAH pak ka buaht karam hai k mera ese logon k  liye kaam karma agar pagal pan hai, deewana pan hai, fraud karma hai, flirt karma hai tu mai ye karta hon aur karta rahon gaa. Mai khud ko buhat sare logon se behter janta hon k agr mai kisi ko ek luqma khana nahi de sakta tu cheenta bhi nahi hon. Agr mere bhai, behen aur bache bhooke hote hain tu kam uz kam mai bhi un k sath he bhooka bethta hon, ye hai Adnan aur yehi chahta hai Adnan. Mere sath enn 5 barson mai buhat log aye, buhat logon ne kaam kia koi kuch dair sath chala aur koi abhi tak sath hai aur koi aya dekha aur chalta bana, un sabh se main ne buhat kuch sekha, zindagi ka maqsad jo banaya hai ussi par chal raha hon, Aap mai se kisi ne mujh ko aaj tak kisi bhi Television talk show main nahi dekha hoga, kisi ne mera koi interview nahi parha hoga, kisi ne meri tasveren akhbarat mai nahi dekhi hongi, waja sirf yehi hai k mai khud ko enn sabh se buaht dour rakhta hon, ye jante howe bhi k ye sabh jo hai buhat zaroori hai aur shayad enn sabh se meri shuhrat ho jae, aur mere ko funds bhi buhat mil jaen, mgr mujh ko ese funds nahi chahiye jin ko lene k liye mujh ko apna              waqt waist kar k aircondition rooms mai bethnna pare, jiss ka koi faida nahi hai, mai apne bhai aur behnon ke bhooki nangi tasvere dikha k logon ki hamdardian nahi sametna chahta, kiun k har ensan ki tarhan enn victims, refuges, IDP’s ki bhi ezat hai aur ye bhi har Pakistani ki tarhan jene ka haq rakhte hain. Mai fir se emotional ho raha hon. Mager kia karon, nahi hota saber, nahi hota control, koi mujh par elzam lage bardasht k ALLAH pak par mamla chora, mgr mer bhai aur behnon k liye galat alfaz estimal kare, enn ki videos aur photos ko galat use kare ye bilkul bardasht nahi. Islam tu hum ko dars deta hai k jo karo esa karo k kisi k elm main bhi na ho. Mgr hum ko essi bemari lag gae hai k hum jo karte hain sari dunya mai dhandhora peetna chahte hain k aur log dekhe aur rashk kare, tarefon k pul bana dain. Yahan mai apne sath paish aye ek bat ko arz karma chahon gaa.
Last year jabh Khyber pakhtoonkhwa mai flood aya aur hum ne noushehra mai khud ko base kia that u hum se ek Jewish nai Tilaviv (Israel) se contact kia aur kaha k wo hum ko medicines, food stuff, aur echi khasi raqam dena chahta hai, main ny un sahib se arz kia k bhai, hum tu buhat chote log hain, na hi koi proper organizational setup rakhte hain tu hum etni bari aid ko sambhal nahi sakte aap United Nation, Government organization ya fir kisi bhi wellknown N.G.O se contact kare shayad wo aap ki emdad ko hathon hath lai sake aur uss ko manage bhi kar sake. Tu wu ahib farmane lage k nahi jo karma hai wo aap k through he karma hai, main nai Ashiyana Camp mai moujood apne volunteers se bat kari, apne camp mai moujood logon se baat kari, victims aur refugees se bat kari. IDP’s se bat kari, fir kuch mukhami logon se bat kari. Sabh ka ek hi jawab tha k hum ko Jewsih ki emadad qabool nahi. Mai ne apne kuch khayal un se share kare mager koi uss emdad ka 1 % bhi lene ko tayar nahi tha. Majboran mujh ko un Jewish sahib ko enkar karma para. Unhon neb hi buhat afsoos kia k wo tu Humenity k naam per humre through Pakistanies kei help karma chah rahe thai mgr nahi kar sake. Aur kuch he din k baad jabh flood ka zoor end howa, shor sharaba khatam howa, jo log apna circus le kar aye thai apna tam jham samet kar wapis chale gae aur victims & refugees akele hone lage tu sirf Ashiayan camp wale he nahi balke bahar wale bhi ane lage k bhai emdad nahi arahi hai. Kuch karo, apne contact use karo wagera wagera, uss time main ne kaha tha k dekho. Ek Yahoodi (Jewish) ek buhat bari umdad hum ko de raha tha k jiss se buhat logon ka bhala ho sakta tha aur shayad essi k zarye humare buhat sare behen bhai kafi liambe arse taka chi zindagi guzar sakte thai, hum ne enkar kar dia abh mai kahan se contact karon aur kia kahon un ko? Yad rakhiye ye na dekho k kon keh raha hai balke ye dekho k kia keh raha hai, Ye na dekho k kon kar raha hai, ye dekho k kia kar raha hai. Hum sabh ensan hain aur dosre ensanon ki ezat aur khayal rakhna hum par farz hai jis ka hiab hum ko har qeemat par dena hai.

Kher baat kahan se kaha chali gae. Mai aaj bhi apni pori koshish karta hon k jese mere camp mai rehne wale bhai reh rahe hain wesi he life mai bhi guzaron. Aur aaj jab yahan (Badin – Sindh) aya hon, tu ye dekh kar dil khoon k anso ro raha hai k humare log yahan ane k liye 4x4 vhicle ki talash main hain, ya koi heli ya chopper mil jae, Lahola wala, yani esse time bhi hum ko luxuries ki pari hoi hai. Aria Adnan bhi tu yahan aya hai, hazaron loog edr se udr ho rahe hain un sabh k pas kia 4x4 hai ya koi heli hai ya koi uran khatola jis pe beth kar hum move kar rahe hain. Sirf aur sirf jazba he kafi hai. Aur wo jazba hoga Ensaniyat ki bhalai ka, apne bhai aur behnon ki bhalai kaa. Aye kash, k esa ho jae k jesa humare politicians tv chows mai farma rahe hain. K kisi party ne 100 truck bheje hain, kisi party na 200 truck bheje hain, kisi nai hazaron rupee taqseem kia hain, kisi ne lakhon tons anaj taqseem kia hai. Abh yetu wohi jante hian k kis ko dia hai aur kabh dia hai, mai tu highway per betha hon aur shayad yahan se koi shortcut ho jis se ho kar humare ye log jate honge mujh ko tu en last 3 days mai koi esa ensan, truck ya saman nazer nahi aya. Jis ke taqseem mere samne hoi ho. Saman tu buhat door ki bat hai. Mai ny khud apne kuch doston se appeal kari k bhai kuch doctors ko bhej do jo ziada nahi sirf 2-3 din humare sath rahe, aur victims ki vecination kar dain, kiun k malaria, dengue, flue, daeria wagera ki beemari buhat tezi se phel sakti hai tu sabh ne he koi na koi bahan kar dia. ALLAH jane k jese kal en ko enn hadisat ka samna nahi karma parh sakta.  Ek bottle pani khareed k dete howe tu log ese sochte hain k jese hum ne un se un ki zindagi ke koi buaht qeemti cheez mang lie hai. Kuch karne k liye aur kuch dene k liye duhat bara aur kushada dil chahiye hota hai. Jo buhat kam logon k pass hai. Mere pass esi kuch misalain hain k jo log day one se huamre sath hain thoda he sahi mgr humari help zaroor karte hain. Aur jabh un se un ka nam pocha jata hai tu wo nahi batate balke kehte hian k bhai ALLAH ne hum ko jo dia hai uss mai se buhat kam he kar rahe hain aur nam k liye nahi apnea mal k liye karte hain. Kash k yehi jazba hum sabh mai ajae tu hum buhat agai ho jain.

Muhtram, bataion tu buhat hain, mgr log kahe ge k ye Adnan wahan kam karne gaya hai ya sirf batain banane k liye, mai jo sochta ho aur jo samjh mai ata hai keh deta hon, munafiqat karni nahi ati. Jo mai kar sakta hon kar deta hon aur jo nahi karsakta mamla ALLAH pak pe chor k sabh ko bata deta hon.

Mere kuch dost yahan (Badin) mere sath moujood hain, aur yahan k halat dekh rahe hain, mai har hour k bad required items ki list banata hon aevery 24 hours uss ko re check kar k apne volunteer sathiun k hawale kar deta hon aur enn sabh mai jo highly reqired items hote hain wo hasil karne ki koshish karta hon. Filhal k kuch calculations jo hain wo aap ki khidmat mai arz hain, ess umid per k aap hamesha ke tarhan humari maddad kare ge, k kuch aur ache kam hum se anjam ho jae, sath sath hum aap sabh se ye appeal kare ge k Badin, Karachi ya Hyderabad se ziada dur nahi hai, humare universities mai parhne wale bhai behnen jo hamesha advanure ki talash mai rehte hain yahan asakte hain humara hath bata sakte hian, hum ko filhal yahan Doctors and pera medics ke buhat zaroorat hai, drinking water & medicines humara main object hai. Baqi tafseelat aap niche parh sakte hain, Appeal ek he hai k aap khud kuch karne ki koshish kare, aap apne doston k sath ek team bana kar asakte hain, aur jo kuch karma chahe kar sakte hain, ap kisi bhi N.G.O’ social working group, political social wing koi join kar sakte hain ya fir humare sath kam kar sakte hain. Yaqeen kariye k hum sabh mil kar essi mushkilat se nimat sakte hain, United Nation, ya international aid tu jabh aye ge tab aye ge aur jabh bate gee tu jotiun maid al ke tarhan k jese pehle howa hai. Ess liye kisi ka wait mat kariye aur khud agae barh kar kaam kariye, jis mai aap ko tasali bhi mile ge aur sakon bhi.

Enn last 3 days mai jo hum ne kia wo kuch ese hai.
Medicines supply: about 300 women
Medicines supply: about 100 children

Food supply: including drinking water and one day food stuff. 200 victims.

Kuch aur saman pipe line mai hai, kuch purchasing ho rahi hai, agr humare doston mai se koi transporter bhai hain jo munasib qeemat le kar humara saman Karachi se yahan puhancha sake, ya koi ese bhai jo humare saman ko transport karwa sake tu please hum se contact kare, humre ese dost jo pharmaceutical and medical stores se munsalik hon un se appeal hai k sample wali medicines hum ko donate karain. Ese dost jo k drinking water hum ko de sakte hon wo hum se contact karain. Hum tu abh Mineral water ko nahi dhoondh rahe balke kuch doston k gharon mai filter lage howe hain khali bottle ko wash kar k uss mai wohi pani bhar bhar k jama kar sakte hain aur hum ko de sakte hain. Humare wo dost jo apne daily expense se apne smoking k kharcho ko rok k just ek packet biscuit ka khareed k hum ko de sake, humare ese dost jo apne 5-10 clothes mai se sirf ek jori kapron ki ya jotiun ki hum ko de sake, tu hum sabh ek buhat bari miqdar mai saman ekhata kar sakte hain aur buhat bari supply line bana sakte hain, ye sabh ese kam hain jo hum buhat asani se kar sakte hain, kisi k samne ja kar help mangne ki zaroorat nahi hogi. Ye sabh tu hum khud bhi kar sakte hain. Buss jazba hone kid air hai. Bharosa aur yaqeen rakhne kid air hai. Rahi Ashiyana Team, (Syed Adnan Ali Naqvi & Friends) per bharosa ya yaqeen hone kit u hum ko na dekhe aap khud ko dekhe, hum ko na dain aap khud kare, abh tu aap ko Waziristan nahi jana hai ye tu aap k buhat khareeb hai. Aye aur khud kariye, Hum tu yehi jante hain k Jo ALLAH par bharosa aur yaqeen rakhta hai woe se kamo par aur kaam karne walon per bharosa aur yaqeen rakhta hai. Hamesha ki tarhan meri aur mere team members ki pori koshish yehi hai k hum khud ko media se jitna door rakh sakte hain rakhe. Kiun k hum apne kaam ke tashheer ya advertisement bilkul nahi chahte k jis ko hasil karne k bad hum apne maqsad aur means se door ho jain.

Humari kisi bhi tarhan help karne ya yahan k halat ko janne k liye hum se rabita kariye.
Insha ALLAH apni pori koshish karon gaa k yahan k halat se jitna ho sake aap ko agahi deta rahon, Mere kisi bhi lafz ya bat bat se agr kisi ki dil azari hoi ho tu maafi chahta hon, mgr ye mere khayalat thy jo aap sabh k sath share karma zaroori thai. ALLAH Pak humari eslah farmae aur hum ko sabit qadam rakhe, Ameen.

Humare contact:
Syeda Faryal Zehra faryal.zehra@gmail.com

+92 345 297 1618 / +92 333 34 26031
+92 313 279 8085 / +92 323 846 6089
+92 342 265 0964 / +92 334 228 9783

Humari location:
Badin Thatta higway (Team Ashiyana Medical Camp).

Jazak ALLAH
Syed Adnan Ali Naqvi & Friends
Team Ashiayan, “Relief efforts for the Flood & Rain Victims – Sindh”

Wednesday, September 14, 2011

Urgently Reuired Items, for the flood victims in Badin, Sindh


With The Name Of ALLAH Almighty
Assalam O Alikum,
Brother,

ALLAH who create us on his (ALLAH) name to spread ALLAH name around the world. To make humanity save, to live us with peace and brotherhood.

As you know the whole Sindh province is facing a lot of trouble from recent rainfall and flood. A hundred and thousands peoples displaced from there native villages, town & villages. Victims and refuges are still searching safe place to live with there families. A huge number of pregnant ladies and under age kids are still living in danger.
Syed Adnan Ali Naqvi & Friends who are working only on the name of ALLAH for the victims of Earthquake, flood and war on terror since last many years is here in Sindh to work for the our brother, sister and children, as we strongly believe that these children are our future and we need to save the future of Pakistan in any condition.
The name of the team is announced as Team Ashiyana under the supervision of Syed Adnan Ali Naqvi, the team members already been announced and an appeal has been made in our last email and telephonic contact.

We know the work and working ability of our beloved government and agencies. With the sorry, our government can do a single work like “to wait a disaster then go to the world to ask help on the name of the victims and effected peoples.” Our government can’t do anything else or more then it. The work of our social agencies and respectable N.G.O’s is like an open book for everyone, what they have done in last years with the victims of earthquake, flood & war on terror. The only one institution in Pakistan can work rapidly, fast and make sure of there task is Pakistan Army. We wants to make salute to our brave soldiers as they are ready and able to do any given task.

Syed Adnan Ali Naqvi & Friends is the name of a social group. We are still working as a non-registered organization as we don’t have enough money to make happy related office to register as. All of our resources and funds are only for the victims of war on terror & we don’t want to use a single penny on any non related expense.

A huge social work for the Earthquake victims, Flood Effected Victims, Sawat, Bajour, Aurkazai Agency I.D.P’s and the victims of war on terror “North Waziristan” is on our credit which we are doing since last many years. In past years we have got many of the offers from National and international agencies, media organizations to make us bost or make us for there news. But as on the teaching of Islam, “Apna kam ese karo k ek hath se du tu dosre hath ko pata tak na lage” we are doing with all of our heart, mind and soul. We have faced many of the trouble in this journey, sever security issues, Taliban’s issues, law & enforcement agencies issue, always shortage of fundings, etc but ALLAH who gives us courage we did it & made it history for our younger’s.
Syed Adnan Ali Naqvi who born and live in Karachi has went to Tribal areas in last years and now he came back in Karachi after 3 years and half. Here are a few words of Adnan’s for us.

WITH THE NAME OF ALLAH
“Mai aaj buhat years k baad Karachi aya hon. Paharon mai rehte rehte, bhook, eflas, aur tangdasti k sath apne victims bhai behnon k sath rehte rehte city ka life style taqreeban bhol chukka hon, shayad yahan jete kese hain ye bhi bhol chukka hon. Mai shayad yahan ata bhi nahi, mgr ALLAH Pak ne ek aur emtihan dia aur shayad ye emtihan ek dafa fir sirf Pakistani qouam ka he nahi balke pori Muslim umah k liye hai. Hum sabh mukhtalif halat mai apni zindagi basar karte hain mager, ALLAH Pak ne humari zindagi ka patren ek he banaya hai. Hum sab ko bhook lagti hai, piyas lagti hai, neend ati hai, jagna hota hai. Zindagi k karobar main masroof hona hota hai. Aur fir ek din bager kisi information k mar jana hota hai. Being a muslim, humara eman hai k hum sabh ko marne k bad apnea mal ka hisab dena hai, mager jabh tak mai Ashiyana camp mai that u mujh ko har lamha yeh fiker rehti thi k mera koi bhi amal kisi bhi tarhan se qabil e hisab na ho. Mager yahan ate hai meri ye fiker bhi jati rahi, ek nafsa nafsi ka alam hai. Jiss ko dekho shayad apne liye he ji raha hai. Kal raat kuch doston se milne ka etifaq howa, un k samne apni bat rakhi k Bhai, hum sindh mai moujood flood and rain victims k liye kuch emdad “Medicines & Mineral Water” ki sorat mai jama kar rahe hain tu tammam ehbab eke k kar k mazrat karte rahe. Ye etifaq bhi howa k kuch ehbab ko baad mai Piza hut ya kisi masroof resturent mai bhi dekha gaya, ALLAH Pak hum sab ko apni apni islah karne ke toufeeq ata farmae. Aur ese ehbab k dimag mai ye soch ata farmae k jo kuch humare pas hai wo hamara nahi hai balke ALLAH pak ka dia howa hai jis ka hisab bahar haal ALLAH Pak ko dena hai.

Mere wo sathi jo day  one se mer ath hain jin mai Mansoor Ahmed, Dr Kashan & Family, Syeda Faryal Zehra & Family, Badarunnisa Baji & family, mai aaj samjh sakta hon k jabh bhi mai enn se apne pas funds k kam hone ka kehta tha aur koi appeal karta tha kitni mushkilat ka samna karma parta hoga. Mujh ko Karachi city ki kisi bhi sarak, road, office, society k age khara ho kar bhek mangne mai koi etiraz nahi hai, mger afsoos yehi hai k humare wo bhai aur behnain jo buhat asani se humare kaam asakti hain wo bhi ese mouqa pe ek taraf chup ho kar bethe rehne mai he apni afiyat samjhte hain. Hum sabh hamesha se ALLAH par bharosa karte hain aur ese nazuk moqon per ALLAH par bharosa aur pukhta nazer ata hai k jo karma hai ALLAH Pak ne he karma hai. Mera yeah eman hai k ALLAH Pak ne jo karma tha kar dia, aaj ese halat ki zimedari humre oper hai, Hum he enn tammam nuksanat aur faidon ke zimedar hain jo aaj hum ko hasil ho rahe hain. Mai mazid kisi aur behes ya taqreer mai jate howe apne doston, family members, aur jahan jahan tak mera pegam puhanche un sabh se yehi appeal karon gaa aur bheek mangon kaa k museebat k ese mouqe per apne Sindh k bhaiun ko tanha na chore, Mai khud aur mere dost aaj yahan moujood hain, aur apni pori koshish kare ge k hum se apni zaat se job hi ho sakta hai kare, apne last experience ko samne rakhte howe jitney bhi victims ko sambhal sakte hain sambhale, aur agr humare etni sakat bhi na rahi tu hum in victims k sath khare zaroor honge k shayad enn ko sahara de kar chalne mai maddad he karsake. Hum yahan koi bari madad ke darkhwast nahi kar sakte na he koi essi apeeal k jis ko parh k log thoda sa afsoos kare aur bad mai bhol bhi jae. Hum aap se appeal karte hain k kam uz kam ek bottle mineral water, kuch biscuits, aur koi bhi ek medicin ager eke k sahib bhi hum ko dain tu hum buhat kuch jama kar sakte hain. Aur hum chahte bhi yehi hain k apne sindhi bhai behno ko saaf pani pilain, aur un k liye medicines ka entizam karain. Take ye log apni age ki manzil ki janib rawana ho sakain, aur sath kheriyat k wahan tak puhanch sake. Baqi tafseelat aap ko humare volunteer bhai aur behen bata sakte hain. Jazak ALLAH.”

Muhtram, the above message Adnan words. Which he said on last night on his speech with volunteer’s who are on the way for Badin.

Once again we are sending you a list of urgent required items for the flood victims. As per the requirement details as well as you can find the stock we have for the support of Ashiyana Team “Syed Adnan Ali Naqvi & Friends”.

List Of Urgent Required Item:

Food Stuff:
1.      Drinking Water “Fresh / Mineral”. Qty: Unlimited
2.      Dates “Khajoor”, Dry food”. Qty: Unlimited.
3.      Chawal (rice), Daal (beans), Sugar, Tea. Qty: Unlimited

Medicines
1.      Disprin, Syp. Panadol Extra / CF, Ponstan, Calpol, Brufin, Septran and all kind of the medicines which can be use in a general medical camp as initial treatment. Qty: Unlimited.
2.      Mosquito netting, Mosquito repellant lotion, Coil, Soap, Match Box etc. “If Available”.

Clothes:
1.      Clothes new or used for any session, for all ages only for Women & Children.
2.      Shoes, Chapal, Sandal, for all ages, for men, women & children.

The item we have with Ashiyana team till Tuesday, September 13, 2011.
Food:
Drinking Water: 3150 Liter.
Biscuits: 100kg
Chips: 10kg
Mosquito Coil. 50 packets.

Medicines:
We have the medicines of Rs. 17,000/= (Seventeen thousands).

Muhtram, we have nothing at this time more then as mention at above. We know this is nothing but as per Adnan bro, it is enough to take a start for our relief efforts. ALLAH Pak gives us more courage and resources to spread our work, Ameen.

We are the team member of Ashiyana Team for relief of flood victims sindh, are requesting for all of you to give us your donation in the form of above mentioned we are not looking for the money, we are not asking for any kind of the financial help from you we wants stuff as much as you can supply us. Insha ALLAH your given donation will be divided into the victims of flood in Badin district without any kind of the self care.

The team of Ashiyana “Syed Adnan Ali Naqvi & Friends” is ready to work with any other social working group, N.G.O, individual or organization and we are available for any kind of the assistance as we have a long experience to deal with these kinds of the disasters.

Another appeal for the volunteer will be announced shortly as first we need to base us at any remote location in the effected areas.

Please contact with any of our volunteer at given number or email:
Syed Adnan Ali Naqvi s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
Syeda Faryal Zehra faryal.zehra@gmail.com
Mohammad Nadeem nadem.mohd@live.com
Faisal Bhai +92 323 846 6089
+92 313 279 8085 / +92 333 342 6031

We and our friends are waiting for your help in any form.

Jazak ALLAH
Team Ashiyana for the relief efforts of flood & rain victims (Sindh)
Syed Adnan Ali Naqvi & Friends.