Sunday, October 02, 2011

’امداد میں تاخیر، بھوک سے اموات کا خدشہ‘


اسلام و علیکم
بین الاقوامی امدادی ادارے آکسفیم نے خبردار کیا ہے کہ بین الاقوامی برادری کی جانب سے پاکستان کے صوبہ سندھ میں سیلاب متاثرین کی امداد میں تاخیر برقرار رہی تو متاثرین کی بھوک سے اموات شروع ہو جائیں گی۔
آکسفیم کی ترجمان ڈاکٹر نورین خالد نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سندھ میں سیلاب متاثرین کی تعداد تازہ اعداد و شمار کے مطابق نواسی لاکھ ہو چکی ہے لیکن ابھی تک امداد کے وعدے پورے نہیں ہو سکے ہیں اور متاثرین کی امداد کے لیے وسائل دستیاب نہیں ہو سکے ہیں۔
انھوں نے کہا کہ متاثرین کی امداد کے حوالے سے بین الاقوامی برادری اور امداد دینے والے اداروں کو فوری طور پر متحرک کرنے کی ضرورت ہے کہ وہ اپنے وعدے پورے کریں۔
واضح رہے کہ جمعہ کو اقوام متحدہ کا کہنا تھا کہ سندھ میں بارشوں اور سیلاب کے متاثرین کی امداد کے سرکاری ذخائر دس اکتوبر کو ختم ہوجائیں گے جبکہ متاثرین کی مدد کے لیے اقوام متحدہ کی قریباً چھتیس کروڑ ڈالر کی درخواست کے جواب میں بھی صرف چھ فیصد حاصل ہو سکا ہے۔
جزاک الله
سید عدنان علی  نقوی اور دوست

ٹیم آشیانہ، بدین سندھ
http://www.bbc.co.uk/urdu/pakistan/2011/10/111002_oxfam_sind_flood_zz.shtml