Friday, March 30, 2012

Waziristan (North) Update: Another Drone Attack At Miranshah "Waziristan"

Assalam O Alikum and good afternoon all,

Another Drone attack has been made by U.S Drone at Main Bazar, Miranshah North Waziristan in this morning just before Namaz e Fajr. Thank GOD Team Ashiyana is save as they were all preparing for the Namaz e Fajr.
Many of the casualities has reported to the local hospital. We are waiting for the further news from Team Ashiyana - Waziristan. Will be updated shortly - Insha ALLAH.

Jazak ALLAH Kher
Syeda Faryal Zehra
Member Team Ashiyana for Waziristan.
Peshawar. Khyber Pakhtoonhkwa.
 

Tuesday, March 27, 2012

وزیرستان (شمالی) سے ٹیم آشیانہ کی اپیل

محترم دوستوں اور ساتھیوں، اسلام و علیکم.
میں آج ہی وزیرستان سے واپس پشاور آی ہوں، ٹیم آشیانہ کی کچھ ارکان ابھی بھی وزیرستان میں موجود ہیں. وزیرستان خاص کر (شمالی)  کے بہت سارے لوگ بہت بوری حالت میں ہیں اور زندگی گزار رہے ہیں. مجھ کو ٹیم آشیانہ کے سرپرست نے وہاں کے پورے حالات بتانے سے روک رکھا ہے نہیں تو حالات ایسے ہیں کہ اگر بتانا چاہوں تو خود میری حالت خراب ہو جاۓ، ٹیم آشیانہ سب کے لئے تو کچھ نہیں کر سکتی مگر کچھ علاقے ایسے ہیں جہاں ہم نے کچھ لوگوں کی جن میں بچے اور خواتین شامل ہیں ذمےداری لے رکھی ہے. الله پاک بھی غیب سے ہماری مدد کا کوئی نہ کوئی راستہ بنا ہی دیتا ہے. 
محترم دوستوں، ٹیم آشیانہ ایک دفع پھر قلیل فنڈز کا شکار ہو رہی ہے. ١٥٠ بچوں کی ذمہ داری اور ٥٠ خواتین کے لئے کم کرنا وو بھی وزیرستان جیسے علاقے میں آسان نہیں ہے. ٹیم آشیانہ اپنے تمام تر وسائل استعمال کر رہی ہے اور ہم کو الله پاک کی ذات پر پورا یقین اور بھروسہ ہے کے جیسے پہلے ہمارے دوستوں نی احباب نے ہماری مدد کری ہے ویسے ہی اس وقت اور انے والے وقتوں میں ہماری مدد کریں گے. 
ٹیم آشیانہ کی اہم ضروریات کچھ یہ ہیں: 
١- بچوں کے لئے کپڑوں کا انتظام کرنا (خصوصاً شلوار قمیض) 
٢- بچوں اور خواتین کے لئے ادویات کا انتظام کرنا (٤ مڈیکل کیمپ کے لئے)
٣- بچوں کے لئے کتابوں کا انتظام کرنا
٤- ٹیم آشیانہ کے اراکین اور کچھ بچوں کے لئے غذا کا انتظام کرنا

مندرجہ بلا ہماری انتہائی اہم ترجیحات ہیں. ہم اپنے صبح ہی دوستوں، احباب سے رابطہ کر رہے ہیں اور ہم کو الله پاک کی ذات پر پورا یقین ہے کے کہی نہ کہی سے ہماری ضروریات پوری ہو جائیں گی - انشا الله.

آپ ہماری کیسے مدد کر سکتے ہیں؟
ہم سب ہی یہ بات اچھی ترہان جانتے ہیں کے پورے پاکستان میں تعلیمی سال ختم ہو رہا ہے. آپ کے بچوں  کی اور آپ کی گزشتہ تعلیمی سال کی کتابیں ہمارے بہت کم آسکتی ہیں. اس ترہان ٹیم آشیانہ کا کافی فنڈ بچ جاۓ گا جو کسی اور استعمال میں لیا جا سکتا ہے. ہم کو کلاس اول سے کلاس دھم (١٠) تک کی کتابیں چاہیے. جس کا انتظام اگر ہم سب مل کر کرنا چاہیں تو کر سکتے ہیں. اس کے علاوہ ہم کو کچھ اور کتابوں کی بھی ضرورت ہے جن میں کچھ درج زیل ہیں.
١- شہید محترمہ بینظیر بھٹو کی کتاب "مشرق کی بیٹی".
٢- محترم پرویز مشرف کی کتاب "سب سے پہلے پاکستان" کا اردو ترجمہ.
٣- پاکستان کی تاریخ سے متعلق کچھ کتابیں.
٤- قائد محمد الی جناح کے بارے میں کچھ کتابیں.
٥- اور کچھ اسلامک کتابیں جن میں زندگی گزارنے کے طریقے بیان ہوں. 
شمالی وزیرستان میں ابھی تک کچھ شرپسند عناصر کا اثر موجود ہے جس کا حل صرف وہاں کے لوگوں کو سہی اسلامی تعلیمات اور پاکستانی بنانے میں ہے. ہم کو بہت خوشی ہے کے صرف اور صرف پاکستان آرمی کے جوان ہی وہاں نہ صرف مڈیکل کیمپ لگا رہے ہیں بلکہ وزیرستان کے بچوں کو ایک اچھا پاکستانی بنانے میں اپنی پوری محنت کر رہے ہیں. الله پاک ہمارے جوانوں کو ہمت، صبر اور حوصلہ عطا فرمائیں - آمین. ہم بھی اپنی چھوٹی سی کوشش کر رہے ہیں ہیں جو لوگ بگڑ گے ہیں ان پر ہم زیادہ محنت نہیں کر سکتے مگر جو بچے ابھی حالات کو دیکھ رہے ہیں ان کے ذہنوں میں اسلام کی سہی تعلیمات اور پاکستان کی محبت شامل کر دیں تاکے آنے والے وقتوں میں یہ بچے ہم سب کی ساتھ پاکستان کی ترقی میں اپنا بھرپور کردار ادا کر سکے. اس مقصد کے لئے ہم نے سب سے مشکل علاقے دتہ خیل اور آس پاس کے بچوں کو تعلیمی سہولت دینے اور دیگر سہولیات دینے کا فیصلہ کیا ہے. ٹیم آشیانہ کے کچھ اراکین اس راے سے متفق نہیں ہیں مگر ہم سمجھتے ہیں کہ ایسے علاقوں میں ہی کم کرنے کی زیادہ ضرورت ہے. اور ہم پوری امید کرتے ہیں کہ ہمارے اس مقصد میں جہاں ہماری فمیلی اور دوست ہمارا ساتھ دیں گے وہی وزیرستان میں موجود مقامی لوگ اور سکورٹی کے ادارے بھی ساتھ دیں گے - انشا الله.
اس مقصد کے لئے ہماری بہت اچھے اور اولڈ کارکن منصور احمد بھائی، فیصل بھائی اور فرحان بھائی نے ذمہ داری لینے کا وعدہ کیا ہے. منصور بھائی کیوں کے ایک استاد بھی ہیں اور آج کل وزیرستان کے بچوں سے بہت گھل مل گے ہیں اس لئے ان کا ہمارا ساتھ دینا بہت ضروری ہے. ہم دتہ خیل میں ایک چوتھا سا سکول شروع کر رہے ہیں جس میں کچھ زیادہ سہولیات دینے کا وعدہ تو نہیں کر سکتے مگر علم دینے کی اپنی پوری کوشش کریں گے، اس کے علاوہ اس سکول میں اسے بچے جن کے گھر والے یا ماں باپ بچھڑ گے ہیں یا جن بچوں کی دیکھ ریکھ کے لئے کوئی نہیں ان کو رکھنے کا بھی انتظام کیا جارہا ہے. انشا الله 
ٹیم آشیانہ نے پہلے ایسے بچوں کو پاکستان کے کسی ایسے ادارے میں بھیجنے کا سوچا تھا جو بچوں کی اچھی ترہان دیکھ بھال کر سکتے ہیں مگر پاکستان کے دوسرے علاقوں میں وزیر بچوں کے ساتھ کیسا سلوک ہوگا اس کا سوچ کر ہم نے ان بچوں کے لئے وزیرستان میں ہی انتظام کرنے کا فیصلہ کیا. الله پاک ہماری مدد کرے اور ہم کو اس کام کو اچھی طریقے سے اور پورا سر انجام دینے کی توفیق عطا فرماے - آمین.
 
محترم دوستوں، ایک دفع پھر ہمارے کچھ دوستوں نے ہم سے تصور اور ویڈیو کا مطالبہ کیا ہے جو ہمارے اختیار میں فلحال نہیں ہے. ہم کو وزیرستان میں کام کرنے کی اجازت ملی ہی اسی اصول اور بنیاد پر ہے کے ہم وہاں کے لوگوں کی تصویر بنا کر دنیا میں نہیں بھیجے گے، ایسے میں وزیر لوگ شاید اپنی ہتک محسوس کرتے ہیں اور کچھ سکورٹی کے مسائل بھی شامل ہیں. ٹیم آشیانہ کا ایمان ہے کے جو لوگ الله کی رہ میں خرچ کرتے ہیں وہ دیکھ کر نہیں بلکے الله پاک کی ذات پر ایمان rakh کر ہی خرچ کرتے ہیں. اور ہمارا رب ایسے ہی لوگوں کو پسند کرتا ہے.
ہم کسی پر کوئی زبردستی نہیں کر سکتے، ڈرا دھمکا نہیں سکتے، ہم صرف دعاکر سکتے ہیں اور اپیل کر سکتے ہیں، ہدایت دینے والی ذات الله پاک کی ہے. الله پاک ہم سب کو ہدایت عطا فرماے آمین. 

تقریباً١٠٠ بچوں کے لئے استعمال شدہ یا نیو کپڑوں کی بھی ضرورت ہے. جو کے ان بچوں کے لئے ایک سال تک کام آسکیں. اس کے علاوہ خواتین کے لئے بھی کپڑوں کی اور خواتین کے کام کی کچھ اشیا کی بھی ضرورت ہے. ہماری بہنیں ان کی ضروریات سے اچھی سے واقف ہیں. 

ادویات یہاں کا سب سے اہم اور ضروری ضرورت ہے. ہم جتنی بھی ادویات یہاں لاتے ہیں ایک یا دو میڈیکل کیمپ میں ہی ختم ہو جاتی ہیں کیوں کے جیسے ہی لوگوں کو پتا لگتا ہے کہ فلاں جگہ کیمپ لگ رہا ہے لوگ دور دور سے آتے ہیں. 
ہماری اگلی پلاننگ میں ٤ میڈیکل کیمپ ہیں جو ہم کو دتہ خیل اور اس کے آس پاس پی علاقوں میں لگانے ہیں جن کے لئے ادویات کا کل لاگت تقریباً ٤ سے ٥ لاکھ(چار سے پانچ لاکھ روپے) تک ہے. الله پاک ہماری مدد فرمائیں. آمین.

اور اور اہم مثلا وزیرستان کی حملہ خواتین کا ہے. ہم کو صرف ایک جگہ وہ بھی وانا میں ایک سہی اسپتال ملا جہاں زچگی کا عمل سہی ترہان مکمل ہو سکتا ہے اکثر خواتین گھروں میں ہی اس عمل سے گزرتی ہیں جس کے دوران اکثر ماں یا بچے یا دونو کی زندگیاں خطرے میں ہوتی ہیں. ہم کو یہ بتاتے ہووے بہت دکھ اور افسوس ہے کہ گزشتہ ماہ ہم نے ایسے ٥ (پانچ) کیس دیکھ جن میں ایک ماں اور چار بچے خالق حقیقی سے جا ملے، الله پاک ان کی مگفرت فرماے اور لواحقین کو صبر عطا فرماے، آمین. 
ایسے واقعات کو روکنے کے لئے وزیرستان میں موبائل میٹرنٹی کے انتظام کی بہت ضرورت ہے جس میں ایک تجربہ کر ھیلتھ ورکر اور نرس ہو جو ضرورت پڑھنے پر حاملہ خواتین کی مدد کر سکے. 

پولیو مہم:
ہم کو پتا لگا کی پورے پاکستان میں پولیو مہم بہت جوش اور جذبے سے چلائی گے ہے. ہم بھی اس امید پر کی شاید اسی بہانے کچھ لوگ وزیرستان کی بچوں کو پولیو کی قطرے پلا کر کم از کم ان بچوں کو پولیو سے بچنے کا انتظام کر دیں گے مگر کچھ جگہوں جیسے وانا یا کچھ آی ڈی پیز کیمپ کی علاوہ وزیرستان کی بہت سارے علاقوں میں پولیو مہم کا کوئی انتظام نہیں کیا گیا. الله پاک اس انتظام کرنے والوں کو توفیق، ہمت اور حوصلہ عطا فرماے، آمین.

ہم اپر درج کی گی کتابوں کی بارے میں تھوڑا سا عرض کر دیں. مشرف صاحب کی کتاب یا بیبی شہید کی کتاب کو یہاں منگوانے کا مطلب یا مقصد ان لوگوں کے لئے کسی قسم کی کوئی مہم چلانا نہیں ہے. نہ ہی ہم کسی بھی طریقے سے سیاست میں شامل ہونا چاہتے ہیں. بلکے ہمارے کچھ ارکان نہیں یہ کتابیں پڑھی ہیں اور ہم صبح اس بات پر متفق ہیں کے ایسی کتابیں ہم لوگوں میں شعور بیدار کرتی ہیں جن سے ہم میں سہی یا غلط کا فیصلہ کرنے کے لئے ایک رہنما کا کردار ادا کرتی ہیں. اس بارے میں اگر کوئی اور کتاب آپ دوستوں کی نظر میں ہو جو ہمارے کسی کم اسکے تو ہم بہت خوشی کے ساتھ اس کتاب کو یہاں شامل مطالعہ کریں گے.

محترم دوستوں اور ساتھیوں. ہم نے مختصر کر کے ہماری کچھ ضروریات اور باتیں اور حالات سے آپ کو اگاہ کیا ہے. اس امید پر کے ہم سب مل کر بہت زیادہ نہ سہی مگر تھوڑا سا حصہ کچھ نیک کاموں میں شامل کر سکیں. ہماری بہن فریال، کینیڈا میں اپنا کام کاج چھوڑ کر یہاں آی ہے. بہن بدر کراچی میں اپنی ٢ ماہ کی بچی کو چھوڑ کر یہاں آی ہے. ہمارے بھائی منصور حادثے کا شکار ہونے کے باوجود اپنی ایک ٹانگ سے معذور (عارضی معذوری)  ہونے کے باوجود یہاں آی ہیں. عدنان بھائی سالوں سے یہاں کام کر رہے ہیں، لاہور کے کچھ ساتھی آتے ہیں. پشاور کے کچھ ساتھی. ہم سب مل کر بہت معمولی اور چھوٹا سا کردار ادا کرنے کی کوشش کر رہے ہیں. مقصد ہمار ایک ہی ہے اور وہ ہے کی اپنی زندگی سے کچھ وقت نکال کر کچھ سرمایا نکال کر ایسے لوگوں کی لئے کام کیا جاۓ جن ک لئے کوئی کام نہیں کرتا. ایسے علاقوں میں کام کیا جاۓ جہاں کوئی جانا نہیں چاہتا. اور ہم اسی کوشش میں ایک ایک دیں گزار رہے ہیں کہ ہم جیسے اور لوگ بھی بغیر کسی انتظار کی خود آے اور پاکستان کی لئے، اسلام کی لئے کام کریں. 

یہ تحریر کچھ زیادہ ہی طویل ہو چلی ہے. ہم آپ سے اجازت چاہیں گے اس دعا کی ساتھ کی الله پاک ہم سب کو ہدایت، توفیق اور حوصلہ عطا فرمائیں، ہم سب کو نیک کام کرنے اور نیک کام کرنے والوں کا ساتھ دینے کی توفیق عطا فرمائیں. آمین.

ٹیم آشیانہ کی مدد کرنے یا رابطے کی لئے درج ذیل استمال کریں.
 
Team Ashiyana, Data khel.
North Waziristan.
team.ashiyana@gmail.com
s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
faryal.zehra@gmail.com
+92 345 297 1618   (for sms or call, leave your text if find switchoff)               

For your funds or contribution please use:

"Ashiyana"
Ms. Badar un Nissa.
A/c # 0100-34780.
United Bank Limited.
Gulistan e Joher Branch. (1921)
Karachi, Pakistan.
Swift Code: UNILPKKA
آپ اپنے صدقات عطیات دیگر بھی ہم کو بھیج سکتے ہیں. اس کے علاوہ، کراچی، لاہور یا پشاور میں ہم سے رابطہ کر کے ہم کو غذائی اجناس، کتابیں، کپڑے وگرا بھی دے سکتے ہیں (اگر ہمارا کارکن ان شہروں میں موجود ہوا)
آپ کی دعاؤں، اور مدد کے منتظر.
ٹیم آشیانہ
شمالی وزرستان 
اسلام و علیکم 
 سیدہ فریال زہرہ 
جزاک الله خیر 

 
      

Sunday, March 25, 2012

وزیرستان سے سید عدنان علی نقوی کا پیغام

اسلام و علیکم، محترم دوستوں اور ساتھیوں. 
الله پاک کے حضور دعا  کرتے ہیں کہ وہ ہم پر اور آپ پر اپنی رحمتیں، برکتیں اور کرم فرماے، آمین. بے شک، ووہی (الله) کی ذات ہے جس نے ہم کو پیدا کیا، ہم کو عقل اور شعور عطا فرمایا کہ ہم (انسان) اس کی نعمتوں کو اچھی ترہان استعمال کریں اور اس (الله) کا شکر ادا کرتے رہیں. الله پاک ہم سب ہی کو اپنی نعمتوں کا شکر ادا کرنے کی توفیق عطا فرماے اور ہم کو نیک لوگوں میں شمار کرے، آمین. 
محترم دوستوں، کافی عرصے کے بعد آپ سے ہم کلام ہونے کا موقع حاصل ہو رہا ہے. میری پوری کوشش یہی ہوتی ہے کے ہم دوست باتیں کم کریں اور ہم اپنے کم اور جس مقد کے لئے یہاں (فلحال وزیرستان) ہیں اس کم پر اپنا پورا دھیان دیں. الله پاک ہم کو اپنے بندوں کی خدمات کا حق ادا کرنے کی توفیق عطا فرماے، آمین. 

محترم دوستوں، آج ٢٥ مارچ ٢٠١٢ ہے اور مجھ کو یہ بتاتے ہوۓ بہت خوشی محسوس ہو رہی ہے کہ آج ٹیم آشیانہ کو یہاں (وزیرستان) میں خدمت انسانیت کرتے ہوۓ تقریباً ٣ برس کا عرصہ مکمل ہوا. ان ٣ برسوں میں ہم نے کیا کیا اس کی تفصیل آپ ہماری پرانی پوسٹ اور ای میل میں ملاحظہ سکتے ہیں. ان ٣ برسوں میں ہم نہیں ہر ترہان کے حالت کا سامنا کیا، جہاں کچھ کامیابیاں حاصل ہوئیں تو وہاں بہت ساری ناکامیوں کا بھی سامنا کرنا پڑا. ٹیم آشیانہ جو کے فرینڈز آف عدنان ہی کی شکل ہے. ہمارے کچھ مستقل دوست تو پچھلے بہت برسوں سے ہمارے ساتھ ہیں الله پاک ان بھی بہنوں کو اور ہمت حوصلہ، صبر اور استقامت عطا فرماے، امین اور کچھ دوست جو ہمارے ساتھ کچھ وقت کے لئے شامل ہوتے ہیں ہیں الله پاک ان کی محنت اور کام کو قبول فرماے اور ہمارے دوستوں کو ایسے کام کرنے کی توفیق عطا فرماے، امین. 
ہم نہیں کیا کیا؟ کیسے کیا؟ کیوں کیا؟ اور کتنا کیا؟ اس کا صرف ایک ہی سبب یا وجہہ ہے. ہم یہ صبح صرف اور صرف الله پاک کی رضا اور اپنے پاکستانی بھائی، بہنوں کے لئے کر رہے ہیں. ہم پاکستان کے ایسے علاقوں میں کام کر رہے ہیں جہاں جانے اور روکنے کا کوئی تصور بھی نہیں کر سکتا. اور الله پاک کے فضل و کرم، اور عنایات سے ہم کو ابھی تک کوئی جانی نقصان نہیں ہوا، ہن ملی نقصان ضرور ہوا مگر ہمارے نزدیک ایسے نقصان کی کوئی اہمیت نہیں ہم نہیں تو ایسا ہی سوچا کہ ہم نہیں نہ سہی کسی اور کے ذریے ہی ہمارا سامان لوگوں تک پہنچ گیا ہوگا. 
ہم نہیں اپنے کام کے دوران بہت سیاست دانوں، اور فلاحی لوگوں سے رابطہ کیا. لوگوں کو آگاہ کیا کہ کہاں کہاں کن کن چیزوں کی ضرورت ہے اور کیا کام کرنا باقی ہنی. مگر صرف وعدے اور دعوے ہی ملتے رہے اس کے علاوہ اور کچھ نہیں. ہم صرف الله پاک کے حضور دعا کرتے ہیں کہ الله پاک ان کو اور ہم سب کو توفیق عطا فرماے، آمین.  
آج ہم سب بہت خوش ہیں کہ، ٢٣ مارچ جو کے یوم پاکستان تھا دتا خیل (وزیرستان) میں ٹیم آشیانہ اور کچھ مقامی لوگوں کے ساتھ مل کر منایا گیا. یہ ایک بہت تعلق حقیقت ہے کہ ہماری طرف سے منعقد کی گی اس میں صرف ٤٠ سے ٥٠ مقامی افراد نے شرکت کری مگر ہماری اتنی محنت کے بعد اگر ہم کچھ محسود اور قبائلی لوگوں کے ذہن تبدیل کرنے میں کامیاب ہوۓ اور اگر الله پاک کی رضا اور خوشنودی شامل حال رہی تو ایک نہ ایک دن سارا وزیرستان اور قبائلی علاقے کے رہنے والے ہمارے پاکستانی بھائی بھی ہمارے ساتھ مل کر یوم پاکستان مانیں گے اور پاکستان کی ترقی اور خوشحالی میں اپنا کردار بھرپور طریقے سے ادا کریں گے. انشا الله. 
باقی تفصیل ہماری بہن فریال اور ہمارے دوسرے والنٹیر ساتھی آپ کو آگاہ کرتے رہے گے. 
مجھ کو اجازت دیں. الله پاک ہم صبح کو صبر اور ہمت اور استقامت عطا فرمائیں. آمین. 
جزاک الله خیر.
آپ کا بھائی
سید عدنان علی نقوی
ٹیم آشیانہ . وزیرستان. 
 s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
team.ashiyana@gmail.com
       



Thursday, March 22, 2012

Team Ashiyana: Work Report for February - March 2012 - Waziristan


Funds and Work Report for the Month Of February – March 20, 2012. Waziristan (North):

Funds (Donation) Details:
In Pak Ruppee’s
Bank Account   (“Qatar”)                                            : Rs. 20,000/= (Twenty Thousands in Pak rupee)
From Western Union (C/o, Faryal Zehra “Canada”) : Rs. 50,000/= (Fifty Thousands in Pak rupees)
Taimour & Family                                               : Rs. 25,000/= (Twenty Five Thousands in Pak rupees)
Mansoor Ahmad Family                                             : Rs.   5, 000/= (Five Thousands in Pak rupee)   
                                        Total Amount                   : Rs 1,00,000/= ( One Lac Only)                          


Raw stuff (Donation) Details:
Cloths for women (Old & New)        : 50 Nos (from Farhad Taimour M-TV)
Clothes for Children (Old & New)    : 100 Nos (Ms Badar Un Nissa’s family)
Medicines                                        : Worth of Rs. 5,000/= (Five Thousands frm Nabil bro – Lhr)
Food Stuff                                        : Nil
Others                                              : Nil

Raw stuff (Purchased) Details:
Medicines                                        : Rs. 50,000/= (Fifty Thousands)
Food Stuff                                        : Rs. 80,000/= (Eighty Thousands “Rs 40,000/= on Credit)
Water                                               : Rs. Nil
Wood, Coal, etc                               : Rs. 5,000/= (Five Thousands)
Warm Clothes, Blanket, Jacket etc    : Rs.Nil
Transportation                                 : Rs. 15,000/= (Fifteen thousands, Half on credit)
Other Raw stuff “Tent, other items”   : Rs. 5,000/= (Five Thousands)                                         
______Total Amount Expensive  : Rs.1,55,000/= (One Lac, Fifty Five Thousands)        
            Balance Amount                : Rs. Nil                                                                           
            Credit Amount                   : Rs. 55, 000/= (Fifty Five Thousands)                        
·         Purchased slips, Vouchers and other’s papers are available (can be shown on request).

Area’s Visited in February– March 2012. Details:
=> .Data Khel and surrounding areas. Medical camp at Datta khel with improper food supply.
=> Visited more than 300 victims of war on terror near Miramshah. Medical camp & clothes supply.

We’re all member’s of Team Ashiyana are thankful to ALLAH Almighty to give us courage to do this act and to serve our brother’s and sister’s in Datta Khel and Miramshah.
Insha ALLAH we will serve our Brother’s, Sisters and children with the same spirit, and with the feeling of humanity.

Team Ashiyana is thankful for our Friends / Donor’s / Contributor’s, for there kind efforts, fund and supplies. May ALLAH gives us Agr e Azeem for this work and gives more courage to do this kind of the work in future.

If you read all of the blog then you can find the sources of our funds and contribution's We don't wants huge amount in our accounts, we need stuff, like medicines, clothes, books and others to distribute into the victims of War on terror specially for the children and women who living under the low level. Team Ashiyana, is under the burden of huge credit day by day, friends and family members are requesting to give there hand of courage to get remove it and for the continue work in these remote areas.
We are Pakistani and proud to be Pakistani. We are proudly Muslim and belongs from different cities and different cast but here we are working together just for the sack of the nation and for the name of ALLAHA Almighty. May ALLAH help us - Ameen.
Friends and readers who wants to know more about team Ashiyana or our working areas or any other details please contact on the following;
team.ashiyana@gmail.com
s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
faryal.zehra@gmail.com
mansoorahmed.aaj@gmail.com
taimour.farhad@gmail.com
or +92 345 297 1618 (If number is going off or not answering please leave your text, this is just because of no signals in the area)

List of Friends / Donor’s / Contributor for February - March ’12.  Session:
Sister Badar Un Nissa, (Karachi)
C/o, Sister Syeda Faryal Zehra (Canada).
Brother Unknown  (Doha – Qatar)
Brother Taimour & Family (Karachi)
Brother Mansoor & Family (Karachi.
List of Volunteers for February – March ’12.  Session:
Syed Adnan Ali Naqvi (Chief Volunteer)
Syeeda Faryal Zehra (Coordinator / Incharge Women wing)
Faisal Alvi (Volunteer / Incharge  Medicines)
Mahnoor Mehsood (Volunteer / Incharge Food & Supply)
Mansoor Ahmed (Volunteer / Incharge Children & Education)
Meesam Khan (Volunteer)
Dr Azfar (General Physician)
Dr Rabia (General Physician)
Mahrukh Bibi (Volunteer)
Arbab Nabi Khan (Volunteer)
Um-e-Fatima (Volunteer)

Dear all, as you know that Team Ashiyana still not an organization or Registered group from Social Welfare Board Pakistan, for that we don’t have any organizational structure to work out. We are in our best try to reform our group but the Rate’s (Official & un-official) to register any N.G.O in Pakistan is so high and our funds can not meet with the said criteria (it is above one lac to be in official). We would like to work same as like we are working now-a-days, our friends, friends of friends, family members are our volunteers and we have proud on them to be a part of Team Ashiyana. May ALLAH give them Agr e Azeem for there work, Ameen.  

Jazak ALLAH
Syeeda Faryal Zehra
Coordinator / Volunteer
Team Ashiyana (Waziristan)
Khyber Pakhtoonkhwa - Pakistan.

Wednesday, March 21, 2012

From Waziristan ( A page of my dairy)

محترم دوستوں
اسلام و علیکم
میرا نام منصور احمد ہے اور آج ٹیم آشیانہ کی جانب سے مجھ کو یہ ذمےداری دی گی
ہے کہ میں ٹیم آشیانہ کے وزیرستان کے بارے میں ایک رپورٹ تحریر کروں اور
وزیرستان کے حالت کے بارے میں آگہی دوں. الله پاک کے حضور دعآ کرتا ہوں کہ
میرا رب مجھ کو سہی لکھنے اور بیان کرنے کی توفیق عطا فرماے - امین.
وزیرستان کے بارے میں میرا تجربہ کچھ زیادہ اچھا نہیں رہا ہے، میں ہمیشہ عدنان
بھائی اور ٹیم آشیانہ کے مستقل ممبران سے یہی کہتا رہا ہوں کہ پاکستان کے اور
بھی علاقے ہیں جہاں فلاحی کام بہت اچھے طریقے سے کیے جا سکتے ہیں، مگر عدنان
بھائی اور فریال بہن ہمیشہ میری اس تجویز کو کوئی خاص اہمیت نہیں دیتے ہیں اور
وزیرستان یا وزیرستان جیسے دوسرے علاقوں میں ہی کام کرنے کو ترجیح دیتے رہے
ہیں، سندھ کے سیلاب زدگان کے لئے کام کرتے ہووے جو تجربہ مجھ کو حاصل ہوا اس
کو سامنے رکھتے ہووے ہی میں نے ٹیم آشیانہ وزیرستان میں شمولیت اختیار کری.
مگر اسلام آباد سے پشاور اور پھر ٹانک پھر وزیرستان تک کے سفر میں جو کچھ
دیکھا اور جو کچھ ہمری ٹیم کے ساتھ ہوا اس کو دیکھ کار میری ہمت بہت زیادہ پست
ہوئی. ہم لوگ ٣ دیں کے تھاکہ دینے والے سفر کے بعد جب میرامشاہ پہنچے تو بہت
بری زیادہ تھکن کا شکار تھے اور میں بہت زیادہ خوفزدہ بھی تھا. جگا جگا سکورٹی
کے ناکے کہیں قدامت پسند پٹھان. اف خدا کیسے کیسے منظر، سفر کے دوران میں
سوچتا جا رہا تھا عدنان بھائی اور ٹیم کس ترہان اتنے مشکل لوگوں کے ساتھ کام
کر رہی ہے. ایک تو زبان کا مسلہ پشاور سے مرامشاہ تک پتا نہیں کتنی دفع پشتو
زبان کو بدلتے دیکھا. میں کیوں کہ کراچی کا رہنے والا ہوں. اور اردو یا تھوڑا
بہت انگریزی سمجھ لیتا ہوں تو میرے لئے تو چپ رہنا ہی بھلا تھا. خیر جیسے تیسے
کر کے مرامشاہ آیا مرامشاہ کیا آیا میں تو جیسے یہاں کے لوگوں کے لئے ایک
عجوبہ بن گیا، گو کہ عدنان بھائی کی ہدایت کے مطابق میں نے قمیض شلوار پہن
رکھا تھا مگر چل ڈھال اور چہرہ تو پھر بھی شہر والا ہی تھا. میں آج سے ٢ برس
پہلے ایک بہت مختصر دورے پر وزیرستان آیا تھا صرف ٢ دیں کے لئے اس دفع کچھ
لوگوں سے ملنے کا شرف حاصل ہوا تو کچھ زیادہ تبدیلی نہیں تھی مگر آج کا
میرامشاہ کل کے میرامشاہ کل کے شہر سے بہت الگ اور بدلہ ہوا ہے. اور مجھ کو
عدنان بھائی اور فریال بہن کی بہت باتیں یاد آرہی ہیں. جبہ وہ ہم کو وزیرستان
کے بارے میں بتایا کرتے تھے تو عیسیٰ لگتا تھا کے جیسے ہم کوئی الف لیلہ کی
کہانی سن رہے ہیں مگر آج خود کو اسی وزیرستان میں دیکھ کر صبح کچھ سمجھ آرہا
تھا. خوبصورت وزیری بچے ہمارے اس پاس تھے، ہماری وزیری بہنیں لمبے لمبے
گھونگھٹ نکالے ہم سے دور کھڑی ہم کو دیکھ رہی تھیں. کچھ بزرگ عدنان بھائی سے
بات کرنے میں مصروف تھے. تھودا دیر بعد ٹیم آشیانہ کے ممبران نے میرا تعارف
کروانا شروع کیا. اور جبہ میں وزیری بھائی بہنوں کو سلام کر رہا تھا تو ایک
طرف خوف تھا کے جانے یہ لوگ مجھ کو کیا سمجھ رہے ہیں اور دوسری طرف الله پاک
کا شکر ادا کر رہا تھا کے اس نے مجھ کو یہ عزت بخشی کے میں یہاں کہ لوگوں کے
درمیان ہوں اور خود کو بہت خوش نسب سمجھ رہا تھا
ایک ایسی جگا جس کا نام سنتے ہی ڈرون کی یاد آجاۓ، خوفناک طالبان اور شدت پسند
جہادی لوگوں کی مکروہ اشکال نظر آنی شروع ہو جاۓ. آپ خود سمجھ سکتے ہیں کہ مجھ
جیسے انجن کا کیا حال ہوگا. مگر قسم ہے اس ذات کی کہ جس کے قبضے میں میری جان
ہے کے جیسے ہی میرا تعارف ان لوگوں سے ہوا ایسی اپنایت ملی کے میں خود ہی بھول
گیا کہ میں کہاں ہوں. جتنا خوف کراچی سے چلتے وقت میرے دل میں تھا وہ سب کچھ
ہی لمحات میں ختم ہو گیا. کچھ ہی دیر میں نماز کا اعلان کیا گیا اور ایک مقامی
مولانا کے پیچھے ہم صبح نے نماز ظہر ادا کری. اس کے بعد عدنان بھائی نے مجھ کو
میری زمداریوں کے بارے میں بتایا اور میں نے فورن ہی اپنا کام سمبھال لئے.
میرا کام وزیری بچوں سے ملاقات کرنا اور ان کے اندر تعلیم کا شوق اجاگر کرنا
تھا ساتھ ہی مجھ کو رات کے خانے کے انتظام میں ٹیم کے دوسرے ساتھیوں کے ساتھ
ہاتھ بٹانا تھا. جب میں وزیری بچوں سے ملا تو سب سے پہلے مجھ کو زبان کا مسلہ
پیش آیا میں نے اپنی پوری کوشش کری کے جتنی آسان اردو بول سکتا ہوں بولوں مگر
بچے میری اردو کو سن کر اور شاید سمجھ کر کسر جواب وزیری میں ہی دی رہے تھے جس
کو سمجھنا فلحال میرے لئے ممکن نہیں تھا. میں نے اپنی اس مشکل کا ذکر فریال
بہن سے کیا اور انہوں نے ایک اور ٹیم ممبر محترم بلال محسود کو میرے ساتھ کر
دیا جو مترجم کا کردار ادا کر رہے تھے. بہرحال میرا یہ تجربہ بہت کامیاب رہا.
ہم لوگ مرامشاہ سے کچھ ہی فاصلے پر موجود ہیں. ایک طرف پہاڑ اور دوسری طرف
مرامشاہ شام میں یہ منظر بہت خوبصورت لگ رہا تھا. کچھ ہی دیر میں کرفیو کا
اعلان ہو گیا اور عدنان بھائی نے ٹیم ممبران کو ضروری ہدایت دینی شروع کردی.
میرا کیوں کہ کچھ عرصہ پہلے اکسیڈنٹ ہوا تھا تو ایسی وجہہ سے ابھی تک چلنے
پھرنے میں کچھ معذوری ہے. الله پاک کا شکر اور احسن ہے کے اس رب نے مجھکو
زندگی عطا فرمائی. الله پاک کی اس کرم نوازی پر جتنا شکر ادا کروں کم ہے.
عدنان بھائی اور ٹیم کے دوسرے ممبران میرا بہت خیال رکھ رہے ہیں. خاص کر یہاں
کے بچے تو بہت ہی محبت کرنے والے اور ملنسار ہیں. مجھ کو ان بچوں اور یہاں کے
حالت پر بہت فکر ہو رہی ہے کے آخر ان بچوں کا مستقبل کیا ہے؟ بس ایسے ہی رہنا
یا یہ بچے بھی ایک دیں پاکستان کی ترقی میں حصہ لینے والے ہیں. یہی سوچ کر
میرے اندر ایک نیا جذبہ جگا اور میں نہیں اپنی پوری توجہ ان بچوں پر ہی مرکوز
کر ڈالی. میں کیوں کہ ایک استاد ہوں اور بچوں کی نفسیات سے کافی حد تک واقف
بھی ہوں تو پہلے ان بچوں کو اپنے ساتھ لائی ہوئی کتابیں دیں جن میں پاکستان
اور اسلام کے بارے میں کچھ معلومات تھیں. پھر ان کتابوں کو پڑھنا اور سمجھانا
شروع کیا. شروع میں زبان کی وجہہ سے بہت مسائل ہووے مگر الله پاک نہیں مشکل
آسان کری اور بچوں کو میری اردو زبان کسی حد تک سمجھ میں آنا شروع ہو گی اور
آرہی ہے.
یہاں میں پاکستان کی افواج اور اداروں کا ذکر نا کروں تو بہت نا انصافی ہوگی.
پہلے صرف سنا ہی تھا اور آج اپنی آنکھوں سے دیکھ رہا ہوں کے ہمری افواج، ہمارے
جوان، کس دلیری سے، اور کتنی بہادری سے اپنے دشمنوں سے نبرد آزمان ہیں.
پاکستان کے دوسرے علاقوں میں تو افواج کے بارے میں جانے کیا کیا کہا جا رہا ہے
مگر اگر کسی نے ہماری افواج اور اداروں کو دیکھنا ہے، ہمارے جوانوں کی ہمت کو
دیکھنا ہے تو وزیرستان آے اور دیکھ کے ہماری افواج وہ کام کر رہی ہیں جو شاید
ہمارے دوسرے اداروں کا ہے. ہمارے جوان، کسی بھی قسم کی تنقید اور باتوں کی
پروا کیے بغیر ہماری سرحدوں کی حفاظت کر رہے ہیں، ایک خاموش جنگ لڑ رہے ہیں
اور ہماری عزتوں کی، جانوں کی حفاظت کر رہے ہیں. میں اپنی افواج پر اور اپنی
قومی اداروں پر جتنا فخر کروں کم ہے. مجھ کو ناز ہے اپنی افواج پر اور اپنے
اداروں پر. اور کاش کے دوسرے پاکستانی بھائی بہنوں کو بھی اپنی افواج پر ناز
ہو.
عدنان بھائی اور ٹیم کے ممبران نے مجھ کو بتایا کے پاکستانی افواج کے جوان نا
صرف وزیرستان میں موجود لوگوں کی حفاظت کا کم سر انجام دی رہے ہیں بلکے تقریبن
تمام ہی انتظامی امور بھی سر انجام دی رہے ہیں. الله پاک ہمارے جوانوں کو ہمت،
حوصلہ اور استقامت دے اور ایسی جذبے کے ساتھ ملک اور قوم کی خدمات کرنے کی
توفیق عطا فرماے - آمیں.
باقی کا انشا الله اگلے صفحات میں لکھوں گا، یہاں صرف ایک ہی لیپ ٹاپ ہے جس پر
ٹیم کے سب ہی ممبران نے اپنے کام کی تفصیل لکھنی ہوتی ہے ہے. زندگی رہی اور
الله پاک نے ہمت عطا کری تو بہت جلد آپ کے سامنے یہاں کے حالت اور ٹیم کی
کارکردگی رکھوں گا.
جزاک الله
منصور احمد
ٹیم ممبر، ٹیم آشیانہ.
Khyber Pakhttonkhwa

Monday, March 19, 2012

Life in Waziristan: (A short note by Team Ashiyana)

From Miramshah (North Waziristan):
اسلام و علیکم
Life has come to a standstill in most parts of North Waziristan Agency due to the non-stop curfew clamped by the authorities for three days.
There has been no business in the tribal region since Saturday as the authorities announced that curfew would be in place on the Bannu-Miramshah Road on Sunday. They later withdrew the announcement and clamped curfew on Monday and Tuesday.
The political administration clamps curfew for two days every week in Waziristan for movement of the security forces in the restive tribal region. The tribesmen complained that besides business and commercial institutions, all schools, government offices and the lone branch of a commercial bank have been closed for the past three days due to the curfew.
The students, who are going to take their annual intermediate examination, are also worried about their future as examination staff has not been able to arrive in Miramshah and Mir Ali so far due to the curfew. "We are not sure whether we will appear in the examinations or not as the staff is yet to arrive," said Mohammad Bilal, a student.
Besides the scheduled curfew, the residents of Kajhori and Mir Ali complained that the local administration in their areas had been imposing unannounced curfew daily after 5 p.m. and causing hardships to the villagers.

We are not is in the position to do much and more for the peoples who are infected by several virus infections, women who are pregnant and children suffering from many diseases. May ALLAH Help us - Ameen.
وولنٹیر ٹیم آشیانہ
آشیانہ کمپ
وزیرستان - خیبر پختونخوا

Sunday, March 11, 2012

On the way for Waziristan!

Assalam O Alikum and Good Evening all,

I am on the way for Waziristan from Peshawar. It is our 2nd try as in 1st we didn't reach there due to high security check. Ashiyana Team # 1, is still there and I am sure that they guys are waiting for us.
Hope that we will be there on next day.

Details will be updated shortly (Insha ALLAH).
Jazak ALLAH
S Faryal Zehra
Team Coordinator "Team Ashiyana"
A group of friends, Syed Adnan Ali Naqvi
Working for the IDP's and Victims of War on Terror in Waziristan & Flood in Sindh.

Friends and family members can follow us at on
http://twitter.com/F4Faryal
team.ashiyana@gmail.com

Wednesday, March 07, 2012

Volunteer Required: Pashtoo / Farsi speaking for Waziristan social work

Assalam O Alikum,

Team Ashiyana is now working for the Victims of Waziristan (Children & Women). We are looking for energetic personals to work with us as volunteer (Pashtoo & Farsi speaking) at Ashiyana Camp Wana - Waziristan.

Students, Teachers, Retired Armed personals, Doctors, Nurses, Pera medics are warm welcome to join us. We are also inviting Volunteer to work in general at our camp.

Friends & Family members are requesting to invite there friends and family members to join us, We are working as a group of the friends of Syed Adnan Ali Naqvi, and our working areas are; 1. 1. To give Medical Aid (to the children & women)
2. To supply food stuff (if available)
3. To provide clothes (into Children & Women)
4. To provide Books & educational stuff (into children only)
5. To invite them be a part of Pakistan with several social activities.

Dear all, We are not an organization or N.G.O kind of the people. We are doing these just for the sack of the Nation and to save our people from the wrong tags. May ALLAH help us and give us courage to do this kind of the activities with the same spirit - Ameen.

Interested personal can contact us by email or by text message at;
team.ashiyana@gmail.com
faryal.zehra@gmail.com
s_adnan_ali_naqvi@yahoo.ca
mansoorahmed.aaj@gmail.com

+92 345 297 1618 (If number is not responding pease leave us a text we'll contact you shortly)

Hope to here some good voice from you guys.
Good luck.
Jazak ALLAH Khairan.
Syeda Faryal Zehra
Team Coordinator. "Team Ashiyana"
Ashiyana Camp, "Wanna - Waziristan"




Sunday, March 04, 2012

ٹیم آشیانہ وزیرستان

اسلام و علیکم
الله پاک کی ذات سے امید کرتا ہوں کہ ہمارے سارے دوست، احباب خوش و خرم ہونگے، کیوں کہ کچھ بیماری، کچھ ذاتی مصروفیت کی وجہہ سے آپ سب سے نہ ہی کوئی رابطہ کر سکا اور نہ ہی آپ کو اپنے کام کی تفصیلات دے سکا، اپنی اس کوتاہی اور لقزش کے لئے شرمندہ اور نادم ہوں اور امید کرتا ہوں کی ابہ سے کوئی اسی سرزد نہ ہوگی. الله پاک مجھ کو اور سارے ساتھیوں کو صحت، تندرستی اور حوصلہ عطا فرماے - امین
ٹیم آشیانہ کی پچھلے کام کی تفصیلات بہن فریال کے ذریے آپ تک پہنچ چکی ہیں، ابہ ہم مزید کیا کر رہے ہیں اس کے بارے میں آپ کو بتانا ضروری ہے، ٹیم آشیانہ نے ٣٥٠ افراد کا کمپ الله پاک کے فضل و کرم سے بہت زمیداری اور محنت سے چلا، بدین سندھ میں موجود ہمارے بھائی بہن ہم سے بہت خوش ہووے مگر فنڈز کی کمی اور سیاسی حالت کی وجہہ سے ہم اس کمپ کو مزید نہیں چلا سکے اور ہم نے ان لوگوں کو الله پاک کے حوالے کر کا اپنے گھروں کو واپس آگے، فریال باجی اور عدنان بھائی نے ایک اور ٹیم ترتیب دے کر وزیرستان کا رخ کیا اور ابہ ٹیم آشیانہ دو ٢ مختلف جگہوں کے لئے کام شروع  کر رہی ہے ان میں یم نے دو ٢ ٹیم ترتیب دی ہیں ایک ٹیم سندھ کے سلب متسیریں کے لئے میڈیکل کمپ کا انتظام کرے گے اور دوسری ٹیم مستقل وزیرستان کے بچوں اور خواتین ک لئے وانا وزیرستان میں موجود رہے گے.
سید عدنان علی نقوی بھائی اور فریال بہن دس (١٠) رکنی ٹیم کے ساتھ وزیرستان میں موجود ہیں
ٹیم آشیانہ (وزیرستان) کی تفصیلات
سید عدنان علی نقوی، وولنٹیر انچارج
فریال زہرہ، وولنٹیر براۓ خواتین
محمد احمد رضا، وولنٹیر براۓ اطفال
ڈاکٹر جمیلہ، وولنٹیر
ڈاکٹر صادق خان، وولنٹیر
بہن عظمت خاتون، نرس وولنٹیر
صبیحہ بی بی، وولنٹیر
فرخ اچکزئی، وولنٹیر
نمیر احمد، وولنٹیر
صاحبزادہ عالم شیر خان، وولنٹیر
ٹیم آشیانہ (وزیرستان) کی ذمہ داریاں
ٹیم آشیانہ وزیرستان کے متاصرہ اور ایسے علاقوں میں خواتین اور بچوں کو طبی سہولیات فراہم کرے گے جہاں حکومتی ادارے یا کوئی اور نہیں پہنچ سکا ہے. اس کے علاوہ وزیرستان کے بچوں کو کپڑوں، اور کتابوں کی فراہمی بھی کی جاۓ گی - انشا الله. ہم اپنی پوری کوشش کریں گیں کے اپنی وزیر بھائی بہنوں کو جس قدر سہولت فرہم کر سکیں کریں
ہمارے وہ دوست جو ٹیم آشیانہ (وزیرستان) کا حصہ بننا چاہتے ہو ہم سے رابطہ کریں. ہم آپ کو پورا یقین دلاتے ہیں کی وزیرستان کے بارے میں جو کچھ بتایا جا رہا ہے ویسا ہر گز نہیں ہے وزیر بھائی بہن بہت محبت اور ملنسار ہیں اور ہماری مدد کے منتظر ہیں. اور ہم سب مل کر ہی اپنے وزیری  بھائی بہنوں کی مدد کر سکتے ہیں اور ان صبح کو پاکستان کا حصہ بنا سکتے ہیں
آئیے اور ٹیم آشیانہ کا ساتھ دیں ایک بہتر، محفوظ، اور اور امن پاکستان کے لئے.
الله پاک، ہم سب کو ہمارے مقصد میں کامیاب کرے اور ہم کو ایک اچھا انسان بنانے کی توفیق عطا فرماے، امن

جزاک الله خیر
منصور احمد
ٹیم ممبر، ٹیم آشیانہ
ٹیم آشیانہ وزیرستان






اور ہمارا رب جس کو چاہے عزت دے اور جس کو ذلت
الله پاک ہم کو ہمت عزت اور حوصلہ عطا فرماے، امین
 
My self, in Abbasi Shaheed Hospital - Karachi, after road accident when I was returning from Badin (Sindh) to Karachi to receive few of my friends. Now recover after 2 surgeries. Thanks for the friends for there prayers, love and wishes. May ALLAH gives me more courage to continue my work as last. Ameen.